دورہ پاکستان، بنگلہ دیش کرکٹ بورڈ نے فیصلہ وزیراعظم پر چھوڑ دیا 

      دورہ پاکستان، بنگلہ دیش کرکٹ بورڈ نے فیصلہ وزیراعظم پر چھوڑ دیا 

  



لاہور (مانیٹرنگ ڈیسک) دورہ پاکستان کے حوالے سے بنگلہ دیشی کرکٹ بورڈ تاحال کسی فیصلے پر نہ پہنچ سکا جس کے باعث دورہ کے شیڈول میں تبدیلی کا امکان پیدا ہو گیا ہے۔تفصیلات کے مطابق رواں ماہ جنوری اور فروری میں بنگلہ دیشی کرکٹ ٹیم نے پاکستان میں تین ٹی ٹونٹی اور دو ٹیسٹ میچزکھیلنے ہیں۔ مہمان بورڈ نے ’بھارتی فارمولے‘ کو اپنا لیا ہے۔یاد رہے کہ چند برس قبل پاکستان نے اپنی ہوم سیریز کے لیے بھارت سے جب رابطہ کیا تو وہاں سے جواب آیا تھا کہ پاکستان جانے کے لیے ہمیں حکومتی اجازت درکار ہے جب تک حکومتی اجازت نہیں مل جاتی ٹور کا انعقاد ممکن نہیں جس کے بعد تاحال ٹیم پاکستان نہ آسکی اور دونوں ممالک کے درمیان باہمی سیریز کا بھی کشیدگی کے باعث اختتام ہو گیا۔ذرائع کے مطابق بنگلہ دیشی کرکٹ بورڈ اب تک دورہ پاکستان کے شیڈول کا فیصلہ نہ کر سکا جس کے باعث دورے کے مجوزہ شیڈول میں تبدیلی کا امکان ہے۔ذرائع کا کہنا ہے کہ دورے پر چھائی غیر یقینی کے باعث فیصلہ نہ کرنے کے بعد بنگلہ دیشی کرکٹ بورڈ نے گیند وزیراعظم کی کورٹ میں پھینکتے ہوئے دورے کی اجازت مانگ لی ہے۔دوسری طرف ذرائع کا کہنا ہے کہ ایک ماہ پر محیط پاکستان سپر لیگ (پی ایس ایل) کے لیے 23 کرکٹرز کی رجسٹریشن اہمیت اختیار کر گئی ہے، شیڈول کے حوالے سے طوالت کا جواز برقرار نہیں رہ پا رہا۔ذرائع کے مطابق بنگلہ دیش کے ٹیسٹ کپتان مومن الحق سمیت چند سینئر کھلاڑی دورے کے لیے تیار ہیں تاہم وکٹ کیپر بیٹسمین مشفیق الرحیم تاحال پاکستان آنے سے گریزاں ہیں۔اس سے قبل بنگلہ دیش کرکٹ بورڈ کے صدر ناظم الحسن نے ٹیم کے دورہ پاکستان کے حوالے سے کہا ہے کہ دورہ نہ کرنے پر آنے والے نتائج پر غور کر رہے ہیں۔بی سی بی کے صدر ناظم الحسن نے ڈھاکا میں بورڈ کے اہم اجلاس میں شرکا سے پاکستان کے دورے میں ٹیسٹ سیریز کھیلنے پر بات کی تھی۔ بنگلا دیش کرکٹ بورڈ (بی سی بی) نے اپنی ٹیم کے دورہ پاکستان کے حوالے سے حتمی جواب دینے کیلئے مزید ایک ہفتے کا وقت مانگ لیا۔بنگلہ دیش کرکٹ بورڈ کی ٹال مٹول تاحال ختم نہ ہوسکی، پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) سے رابطہ کرکے ٹیم کے دورہ پاکستان کے حوالے سے حتمی جواب دینے کے لیے مزید ایک ہفتے کا وقت مانگ لیا، تاخیر کے سبب پاکستان کرکٹ بورڈ پریشانی کا شکار ہوگیا۔بنگلہ دیش کرکٹ بورڈ کو جمعرات کو اپنی ٹیم کے دورہ پاکستان کے حوالے سے فیصلے سے آگاہ کرنا تھا لیکن سارا دن انتطار کے بعد خبر یہ آئی کہ بنگلہ دیش کرکٹ بورڈ نے سیریز کے حوالے سے ابھی کوئی فیصلہ نہیں کیا اور مزید ایک ہفتے کا وقت مانگ لیا ہے۔پی سی بی ترجمان کے مطابق سیریز کے حوالے سے دونوں بورڈز کے درمیان رابطہ ہوا ہے، بی سی بی نے بتایا کہ انہیں ابھی مزید ایک ہفتہ درکار ہے وہ اگلے ہفتے سیریز کے حوالے سے آگاہ کر دیں گے۔انہوں نے بتایا کہ ابھی کسی پروپوزل پر بات نہیں ہوئی، نئی پیش رفت پر فی الوقت کوئی تبصرہ نہیں کیا جاسکتا۔ذرائع کا کہنا ہے کہ سیریز کے اعلان میں تاخیر پی سی بی کے لیے پریشان کن ہے۔خیال رہے کہ اس سے قبل بنگلادیشی بورڈ نے کہا تھا کہ وہ دورہ پاکستان میں صرف ٹی ٹوئنٹی سیریز کھیلے گا ٹیسٹ میچز نہیں جس پر پاکستان نے کہا تھا کہ بنگلادیشی بورڈ پاکستان میں ٹیسٹ میچز نہ کھیلنے کی وجہ بتائے۔

ناظم الحسن کا کہنا تھا کہ ہمارے ہاتھ میں بہت کم وقت ہے تو جمعرات کو فیصلہ کر لیں گے۔ان کا کہنا تھا کہ ہمیں دورہ نہ کرنے پر آنے والے نتائج پر غور کرنا ہے اور سب کیساتھ بات کی، ہم ٹی ٹوئنٹی کی دوطرفہ سیریز سے پریشان نہیں ہیں لیکن ہم ورلڈ ٹیسٹ چیمپئن شپ کے حوالے سے واضح نہیں ہیں۔بی سی بی کے صدر کا کہنا تھا کہ ہم نے کہا تھا کہ ہم ٹی ٹوئنٹی کھیلنا چاہتے ہیں لیکن پاکستان ٹیسٹ کھیلنا چاہتا ہے، ہم ورلڈ ٹی ٹوئنٹی سے قبل ٹی ٹوئنٹی کھیلیں گے، یہ پی سی بی کی تجویز تھی لیکن ہم نے اب تک فیصلہ نہیں کیا۔سیریز کے حوالے سے ان کا کہنا تھا کہ اگر اس پر غور کریں تو 3 ٹی ٹوئنٹی کھیلنے کے مقابلے میں ایک ٹیسٹ میں زیادہ وقت لگتا ہے، ہم وہاں پہنچنے کے اگلے روز ہی ٹیسٹ کھیلیں گے۔ان کا کہنا تھا کہ کبھی نہیں کہا کہ پاکستان میں نہیں کھیلیں گے لیکن دورے کے وقت سے پریشان ہیں کیونکہ ہر کوئی زیادہ وقت ٹھہرنا نہیں چاہتا اور ٹی ٹوئنٹی سیریز کھیلنے کے لیے 7 یا 8 دن لگیں گے۔ناظم الحسن کا کہنا تھا کہ وکٹ کیپر اور سینئر بیٹسمین مشفق الرحیم نے پاکستان جانے کی دلچسپی کبھی ظاہر نہیں کی اور دیگر کھلاڑی مختصر دورہ کرنا چاہتے ہیں۔ناظم الحسن کا کہنا تھا کہ اس حوالے سے ہم نے پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) کو آگاہ کیا ہے لیکن انہوں نے جواب دیا کہ ہمارے کھلاڑیوں نے پاکستان کے مختلف شہروں میں 35 روز تک پی ایس ایل کھیلنے پر اتفاق کیا ہے تو پھر وہ قومی ٹیم کے ساتھ اس سے کم عرصے میں کھیلنے کو تیار کیوں نہیں ہیں۔ان کاکہنا تھا کہ ہماری ٹیم کے کوچنگ سٹاف کے اکثر اراکین بھی جانے کو تیار نہیں ہمارے ہیڈ کوچ نے کہا تھا کہ ٹی ٹوئنٹی کھیلنے جاؤں گا اور تمام کھلاڑی بھی مختصر دورہ کرنا چاہتا ہیں۔

خیال رہے کہ بنگلہ دیش کی کرکٹ ٹیم کا دورہ پاکستان رواں ماہ کے آخر میں شیڈول ہے جس میں 3 ٹی ٹوئنٹی اور 2 ٹیسٹ کھیلے جانے ہیں لیکن بی سی بی کی جانب سے تجویز دی گئی تھی ٹیسٹ سیریز کو موخر کر دیا جائے۔ایک تجویز مہمان بورڈکی طرف سے یہ بھی سامنے ا?ئی تھی کہ 3 ٹی ٹونٹی سیریز کے ساتھ ایک ٹیسٹ میچ کھیل سکتے ہیں جبکہ دوسرا ٹیسٹ میچ ڈھاکا میں کروا لیں اس تجویز کو پاکستان کرکٹ بورڈ کی طرف سے مسترد کر دیا گیا تھا۔پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) نے بنگلہ دیش کرکٹ بورڈ کی اس تجویز کو مسترد کردیا تھا اور اس کی ٹھوس وجوہات بتانے کا مطالبہ کیا تھا جبکہ اس معاملے پر آئی سی سی میں لے کرجانے کا عندیہ بھی دیا تھا۔

مزید : کھیل اور کھلاڑی


loading...