30یا 50روپے؟ اورنج ٹرین کرایوں کی سمری کابینہ کمیٹی کو ارسال، میٹرو بس کرایہ میں اضافہ کی خبریں بے بنیاد

30یا 50روپے؟ اورنج ٹرین کرایوں کی سمری کابینہ کمیٹی کو ارسال، میٹرو بس کرایہ ...

  



لاہور(اپنے نمائندے سے)میٹرو بس کے کرایہ میں اضافے کی اطلاح بے بنیاد نکلی مگر اورنج ٹرین کے کرائے کے تعین کیلئے محکمہ ٹرانسپورٹ حکام نے سر جوڑ لیے۔روزنامہ پاکستان کو ملنے والی معلومات کے مطابق محکمہ ٹرانسپورٹ نے اورنج ٹرین۔کرایوں کے تعین کیلئے سمری کیبنٹ کمیٹی کو بھجوا دی۔ ذرائع کے مطابق اورنج ٹرین کا کرایہ 30 روپے سے لیکر 50 روپے تک ہو سکتا ہے۔ سیکرٹری ٹرانسپورٹ اسد رحمان گیلانی نے کہا کہ اورنج ٹرین کے فلائیٹ فئیر یا سٹریٹ فئیر کا فیصلہ کیبنٹ کریگی۔ اس حوالے سے انہوں نے مزید کہا کہ اس میں سبسڈی کو بھی مد نظر رکھا جائے کہ حکومت اس پرجیکٹ پر کتنی سبسڈی دیتی ہے زیادہ سبسڈی ہو گی تو کم کرایہ ہو گا اگر کم سبسڈی ہو گی تو کرایہ زیادہ ہو سکتا ہے اور کہا کہ اورنج ٹرین کے کرائے کے تعین کے حوالے سے کیبنٹ کو مختلف پہلوؤں کے حوالے سے تجاویز بھیج دی ہیں،کیبنٹ کمیٹی تمام پہلوؤں سے جائزہ لینے کے بعد فیصلہ کریگی، ذرائع کے مطابق اس میں کیبنٹ کمیٹی پر منحصر ہے کہ اورنج ٹرین کے آپریشنل اخراجات کرایوں کی مد پورے کرنے ہیں یا پھر کیپٹل اخراجات کرایوں سے پورے کرنے ہیں۔ ذرائع کے مطابق ماس ٹرانزٹ اتھارٹی نے اورنج ٹرین کا کرایہ میٹروبس کے کرایہ کے برابر رکھنے کی تجویز دی ہے۔ جبکہ دوسری جانب صوبائی وزیر ٹرانسپورٹ نے میٹرو بس کے کرایہ میں اضافہ کی اطلاعات کو بے بنیاد قرار دیدیا

مزید : میٹروپولیٹن 1