کراچی،پروفیسر شمیم اختر  کی نماز جنازہ ادا کر دی گئی 

کراچی،پروفیسر شمیم اختر  کی نماز جنازہ ادا کر دی گئی 

  



کراچی (پ ر)خارجہ امور کے ماہر شعبہ بین الاقوامی تعلقات جامعہ کراچی کے سابق سربراہ اور معروف تجزیہ کار پروفیسر شمیم اختر کی نماز جنازہ جامعہ کراچی کی مسجد میں ادا کر دی گئی۔ تدفین بھی جامعہ کراچی کے قبرستان میں عمل میں آئی۔ نماز جنازہ میں سابق وفاقی وزیر جاوید جبار، شعبہ بین الاقوامی تعلقات کے سابق سربراہان ڈاکٹر سکندر مہدی، ڈاکٹر مونس احمر، فرائیڈے اسپیشل کے مدیر یحییٰ بن زکریا، شعبہ تاریخ کے چیئر مین طحہٰ صدیقی، جماعت اسلامی کراچی کے نائب امیر ڈاکٹر اسامہ رضی، سینئر اساتذہ، مرحوم کے دوست احباب، عزیز و اقارب اور شاگردوں نے شر کت کی اور ان کی خدمات کو خراج تحسین پیش کیا۔ اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے ڈاکٹر اسامہ رضی نے کہا کہ مرحوم کی تعلیمی خدمات  ہمیشہ یاد رکھی جائیں گی۔ وہ ایک اعلیٰ مقام رکھتے تھے اور بہت بڑا نام تھے۔ ان کے مضامین اور تحریریں نہ صرف طلبہ و اساتذہ بلکہ بین الاقوامی امور سے وابستہ افراد کے لیے رہنمائی کا باعث بنتی تھیں۔ وہ فرائیڈے اسپیشل میں بھی اکثر کالم اور تجزیے لکھا کرتے تھے۔ ڈاکٹر اسامہ رضی نے کہا کہ پروفیسر شمیم اختر ابتدا میں نظریاتی اعتبار سے بائیں بازو کے ساتھ تھے مگر روس کے ٹوٹنے کے بعد انہوں نے اپنی رائے سے رجوع کر لیا تھا اور وہ اسلامی تحریکوں کے ساتھ کھڑے ہو گئے تھے اور ان کی تحریریں اسلامی تحریکوں کی حمایت میں ہو تی تھیں۔ دریں اثناء پروفیسر شمیم اختر کے انتقال پر امیر جماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمن،نائب امراء برجیس احمد، ڈاکٹر واسع شاکر،راجہ عارف سلطان،مسلم پرویز،سیکریٹری کراچی عبدالوہاب،ڈپٹی سیکریٹریز حافظ عبدالواحد شیخ، یونس بارائی،عبدالرزاق خان،انجینئر عبدالعزیز،راشد قریشی،نوید علی بیگ، عبدالرحمن فدا اور سکریٹری اطلاعات زاہد عسکری نے گہرے دکھ اور افسوس کا اظہار کرتے ہوئے مرحوم کے لیے مغفرت،لواحقین و پسماندگان کے لیے صبر جمیل کی دعا کی ہے۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر