بونیر میں سال رفتہ کی نسبت جرائم کی شرح کم ریکارڈ کی گئی

        بونیر میں سال رفتہ کی نسبت جرائم کی شرح کم ریکارڈ کی گئی

  



بونیر (ڈسٹرکٹ رپورٹر)صوبہ خیبر پختون خواہ کے ضلع بونیر میں سال 2019کے دوران جرائم کی شر ح میں گذشتہ پانچ سالوں کی نسبت ر یکارڈ کمی واقع ہو ئی اورپوے ؁ ضلع میں صرف 2087جرائم ر جسٹرڈ ہو ئے۔سال 2018میں یہ تعداد 9561،سال 2017میں 12331،سال 2016میں 9115جبکہ سال 2015میں یہ تعداد 7164تھی۔بونیر پولیس نے سال 2019کے دوران جرائم پیشہ افراد،منشیات فروشان اور چوری چکاری میں ملوث افراد کیخلاف کارروائیاں کر تے ہوئے 2643ملزمان گرفتار کر کے اُن کے خلاف 2093مقدمات در ج کئیے۔ڈسٹرکٹ پولیس افیسر سہیل خالد کے دفتر سے لئیے گئے اعداد و شمار کے مطابق بونیر پولیس نے سر چ اینڈ سٹرائیک اپر یشنز،سنائپ چیکنگز،ضلع کے داخلی و خارجی چیک پوائنٹس اور چھاپوں کے دوران 30کلاشنکوف،60بندوقیں،300پستولز اور 4506عدد مختلف بور کے کارتوس برامد کر کے ملزمان کو پابند سلاسل کیا۔اسی طر ح سال 2019کے دوران بونیر پولیس نے منشیات فروشان اور سمگلروں کے خلاف کارروائیاں کر تے ہوئے اُن کے قبضے سے 95747گرام چرس،288گرام ہیروئن،205گرام آفیون،602گرام ائس اور 30بوتل شراب برامد کر کے ملزمان کو جوڈیشل حوالات بھجوائے گئے۔بونیرپولیس نے مختلف کارروائیوں کے دوران 109مجرمان اشتہاری گرفتار کر لئیے جس میں دہشت گردی سمیت قتل مقاتلے اور دیگر جرائم میں ملوث مجر مان اشتہاری شامل ہیں۔بونیر پولیس نے پرویکٹیو پولسنگ پر عمل پیرا ہو کر 7075اشخاص کارروائی انسدادی کی خاطر اور 184 عادی مجر مان و منشیات فروشان دفعہ 110میں پابند ضمانت کئیے جبکہ دیگر اضلاع سے آئے ہوئے879 مشکوک اشخاص زیر دفعہ 109چالان عدالت کئے گئے۔بونیر پولیس نے ٹریفک وارڈن سسٹم کے ذریعے ٹریفک کورواں دواں ر کھنے کے لئے 2لاکھ305ڈرائیواران کو ٹریفک قوانین کے خلاف ورزیوں پر چالان کئے جس میں کم عمر و بغیر ہلمٹ کے موٹر سائیکل چلانے والے بھی شامل ہیں۔اسی طر ح مختلف کارروائیوں کے دوران بذریعہ VVS چیکنگ 8گاڑ یاں برامد کئے جو دیگر اضلاع سے چوری ہوئی تھے۔بونیر پولیس نے سال 2019کے دوران چوری کے 20موٹر سائیکلیں برامد کر لئے ہیں۔موجودہ حکومت کے اصلاحات کی روشنی میں ڈسٹر کٹ لیول پر ڈی ار سی بونیر میں 402تنازعات کے متعلق در خواستیں موصول ہوئے جس میں 306فر یقین کے مابین انکی رضامندی سے راضی نامے ہو ئے جبکہ 89تنازعات لیگل ایکشن کے لئے عدالتوں میں بھیجوائے گئے اور7 تنازعات تاحال پنڈنگ ہیں۔ میڈ یا سے بات چیت کے دوران ڈسٹر کٹ پولیس افیسر سہیل خالد نے کہاکہ بونیر ضلع میں جرائم پیشہ افراد اور منشیات فروشان کے لئے کو ئی جگہ نہیں۔انہوں نے کہاکہ ہم نے تمام ایس ڈی پی اوز اور ایس ایچ اوز کو ہدایات جار ی کی ہیں کہ وہ ضلع میں جرائم پیشہ افراد اور چوری چکاری اور منشیات فروشی کے دھندے میں ملوث افراد کی نقل و حر کت پر کھڑی نظر ر کھے اور آمن و امان کی صورت حال کو خراب کر نے والوں سے اہنی ہاتھوں کیساتھ نمٹا جائے۔انہوں نے کہاکہ سال 2019کے دوران جرائم کی شر ح میں دیگر سالوں کی نسبت 70فیصد کمی واقع ہوئی ہے اور ہماری کوشش ہے کہ ہم اس کو مذید کم کر سکے۔انہوں نے کہاکہ پولیس پر عوام کا اعتماد بحال ہو ر ہاہے۔انہوں نے عوام الناس سے اپیل کی کہ وہ جرائم کی روک تھام اور پرآمن معاشرے کے لئے پولیس سے تعاون کر یں۔

مزید : پشاورصفحہ آخر