قادیانیوں کی مصنوعات کا استعمال شرعا حرام ہے: مفتی شہاب الدین پوپلزئی 

قادیانیوں کی مصنوعات کا استعمال شرعا حرام ہے: مفتی شہاب الدین پوپلزئی 

  



تورڈھیر(نمائندہ خصوصی) عالمی مجلس تحفظ ختم نبوت کے زیراہتمام تحصیل لاہورکے منعقدہ سالانہ اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے صوبائی امیر مفتی شہاب الدین پوپلزئی نے کہاہے کہ عالمی مجلس تحفظ ختم نبوت کے تین بنیادی اہداف ہیں جن میں پہلاہدف حفاظت ایمان ہے کہ منکرین ختم نبوت کے چالوں سے ہوشیار رہتے ہوئے اپنے اپنی نئی نسل کے ایمان کی حفاظت کرتے رہیں گے دوسرا ایمان کی دعوت ہے تاہم قادیانیوں کو مشرف بہ اسلام ہونے کی دعوت قرآن وحدیث کے احکامات وتعلیمات سے اچھی طرح واقف مسلمان ہی دے سکتے ہیں عام مسلمانوں کو خاموش دعوت کی ترغیب دی جاتی ہے کہ وہ قادیانیوں سے سوشل بائیکاٹ کریں گے قادیانیوں سے معاشی ومعاشرتی بائیکاٹ یہ ہے کہ انکی مصنوعات کی خرید وفروخت اور استعمال ترک کردیں قادیانیوں کی مصنوعات کا استعمال شرعاً حرام ہے جبکہ تیسراہدف دفاع پاکستان ہے کہ ملک کے جغرافیائی سرحدات کادفاع افواج پاکستان جبکہ نظریاتی وایمانی دفاع ہماری ذمہ داری ہے اس موقع پر ضلعی امیر شیخ اعزازالحق اور شیخ الحدیث مولانا سبحان اللہ نے بھی خطاب کیا اجتماع زیر صدارت شیخ ؒالقرآن مولانا عبدالحق بمقام دارلعلوم مجددیہ مانکی منعقد ہوا جسمیں دیگراکابرین مولانا اعجاز، مولانا فضل علی شاہ، مفتی عابد وہاب، مفتی غنی الرحمن، مفتی رسال محمد اور مولانا ضیاالحسن جب کہ ہزاروں کی تعدادمیں ختم نبوت کے پروانوں نے شرکت کی صوبائی امیر مفتہ شہاب الدین پوپلزئی کا مزید کہنا تھا کہ ایک وقت ذوالفقار علی بھٹو کے دورمیں بھی بہت سخت گزرا کہ بڑے بڑے منصب اور عہدوں پر قادیانی فائز اور قابض تھے چینوٹ میں قادیانیوں کے سالانہ اجتماع کو ہوائی جہازوں کیذریعے سلامی دی گئی جسکے خلاف عالمی مجلس تحفظ ختم نبوت کے اکابرین نے چھ ماہ کا ڈیڈ لائن دے دیا اورالحمدللہ تین ماہ نو دن بعد ہی منکرین ختم نبوت کو خارج از دائرہ اسلام قرار دیتے ہوئے قومی اسمبلی سے آرڈیننس منظور ہوا تاہم آج کا دور اُس دور سے زیادہ سخت،خوفناک اور خطرناک ہے کہ اس میں حکومت ہی منکرین ختم نبوت کی سرپرستی کررہی ہے اورانتہائی افسوس کی بات ہے کہ قادیانیوں کے خلاف آرڈیننس توموجود ہے مگر عملی نفاذ نہیں۔ جسکا عملی ثبوت آسیہ ملعونہ کی رہائی ہے کہ عدالت سے سزایافتہ ملعونہ عورت کو حکومتی سطح پر سپورٹ کیا گیا مفی شہاب الدین پوپلزئی کا کہنا تھا کہ 100قرآنی آیات اور210 احادیث مبارکہ نبی کریم ؐ کے اعزاز میں موجود ہیں نبی کریمؐ نے پیش گوئی کی تھی فرمایاہے کہ میرے بعد بڑے بڑے کاذبین آئیں گے جو جھوٹی نبوت کا دعویٰ کرینگے جنکا دعویٰ نبی کریمؐ کے منصب پر حملہ اور گستاخی ہوگی جبکہ رسول کریمؐ کی شان میں گستاخی کی (ایک ہی سزا۔۔سر تن سے جدا) ہے جسمیں اورکوئی گنجائش نہیں انہوں نے شرکا اجتماع پر زوردیا کہ عقیدہ ختم نبوت کا پیغام گھرگھرپہنچاتے رہیں ہماری نئی نسل کویں کی منڈک کی طرح نہیں جو گھر سے باہر دوسرے ممالک میں نہیں پہنچے گی جہاں پر منکرین ختم نبوت ہماری نئی نسل کے نوجوانوں پر ایڑھی چوٹی کازور لگاکے انہیں گمراہ کرنے کی کوششیں کررہے ہوتے ہیں جنکی چالوں حفاظت کا ایک ہی راستہ ہے کہ عقیدہ ختم نبوت کے متعلق ہماری نئی نسل پوری طرح معلومات رکھتے ہو تخلیق کے اعتبار سے حضور نبی کریمؐ سب سے اول اور بعثت کے اعتبار سے آخری رسول ہیں جن پر نبوت کا دروازہ بند کیا جاچکا ہے اور انکے بعد کوئی بھی نبی نہیں آئیگا یہی تمام مسلمانوں اور اہل سنت والجماعت کا عقیدہ ہے۔ 

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...