جماعت اسلامی نے مسلم لیگ(ن) اور پیپلزپارٹی پر حکومت سے این آر اولینے کا الزام عائد کر دیا

جماعت اسلامی نے مسلم لیگ(ن) اور پیپلزپارٹی پر حکومت سے این آر اولینے کا ...
جماعت اسلامی نے مسلم لیگ(ن) اور پیپلزپارٹی پر حکومت سے این آر اولینے کا الزام عائد کر دیا

  



اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن)جماعت  اسلامی نےمسلم لیگ(ن) اور پاکستان پیپلزپارٹی پر حکومت سے این آر اولینے کا الزام  عائد کرتے ہوئے کہا ہے کہ حکومت  نے قانون سازی کے لئے  اپوزیشن کی بڑی جماعتوں کو این آر او دیا ہے، دیگر جماعتون کا ان معاملا ت سے  کوئی تعلق نہیں ہے۔

تفصیلات کےمطابق سپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر کی صدارت میں ہونےوالےاجلاس میں حکومت اوراپوزیشن اراکین کےدوران نوک جھوک کاسلسلہ جاری رہا جبکہ حکومتی وزراء کی جانب سےاکثریتی سوالات کےجواب نہ آنے پراپوزیشن نےشدیداحتجاج بھی کیا۔پاکستان  پیپلزپارٹی کےرہنماسیدنوید قمرنےکہا کہ وزارت داخلہ کے20سوالوں میں سے18 کےجوابات نہیں دیئے گئے،ایوان کے ساتھ مذاق کیا جا رہا ہے جس پرسپیکر  اسد قیصر نے سیکرٹری داخلہ کو ایوان میں طلب کرتے ہوئے خبردار کیا کہ  گزشتہ کئی دنوں سے وقفہ سوالات میں وزارت داخلہ کے حوالے سے جوابات نہیں دیئے جا رہے۔سپیکر نے وفاقی وزیراسد عمر کو ہدایت کی کہ وہ وفاقی وزیر داخلہ سمیت دیگر حکام سے رابطہ کرکے بلوائیں تاہم  کافی دیر تک کوئی جواب دینے ہی  نہ آیا جس پر  سپیکر کی جانب سے وقفہ سوالات  ہی موخرکردیا گیا ۔جماعت اسلامی کے رکن مولانا عبدالاکبر چترالی نے کہا کہ حکومت نے مسلم لیگ (ن) اور  پیپلزپارٹی کے ساتھ این آر او کیا ہے مگر ہم اس این آر او کا حصہ نہیں ہیں، آرڈیننس کی واپسی پر ہمارا موقف بھی ہونا چاہئے ۔وزراء اس نکتہ اعتراض پر خاموش رہے ۔ 

مزید : قومی