شالیمار ، قاری نے معمولی تاخیر پر تشدد کر کے 7سالہ بچے کو موت کے گھاٹ اتار دیا

شالیمار ، قاری نے معمولی تاخیر پر تشدد کر کے 7سالہ بچے کو موت کے گھاٹ اتار دیا

لاہور(خبرنگار) شالیمار کے علاقہ میں موبائل فون پر لوڈ کروانے میں تاخیر پر مدرسہ کے قاری نے چھڑی سے تشددکر کے 7سالہ بچے کو تشدد کر کے موت کے گھاٹ اْتار دیا ۔ بتایا گیا ہے کہ ابراہیم کالونی میں واقع قاری احمد رضاکے مدرسہ میں 7سالہ عبدالوھاب دینی تعلم حاصل کرتا تھا ۔ گزشتہ شام وہ ساتھی بچوں کے ہمراہ سبق پڑھ رہاتھا کہ مدرسہ کے قاری احمد رضا نے اس کو اپنے موبائل فون پر لوڈ کروانے کا کہا جس پر کم سن عبدالوھاب نے تعمیل میں دیر کردی قاری احمد رضا غصہ میں آگیا اور چھڑی سے تشدد کر کے اسے شدید زخمی کر دیا ۔ تشدد کے دوران 7سالہ بچہ کی کولہے کی ہڈی ٹوٹ گئی ۔ واقعہ کے خلاف لواحقین اور اہل علاقہ سراپا احتجاج بن گئے اور مدرسہ کے قاری کی درگت بنانے کے بعد پولیس کے حوالے کردیا ۔ کم سن بچہ کو شالیمار ہسپتال میں لے جایا گیا جہاں رات گئے زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے وہ دم توڑ گیا ۔پولیس نے قاری احمد رضا کو حراست میں کم سن بچہ کی لاش قبضہ میں لیکر مردہ خانہ میں جمع کر وادی ہے۔

مزید : علاقائی