قومی خزانے کو 6ار ب روپے کا نقصان پہنچانے والے 10افسر عہدوں پر برقرار

قومی خزانے کو 6ار ب روپے کا نقصان پہنچانے والے 10افسر عہدوں پر برقرار

لاہور(ارشد محمود گھمن /سپیشل رپورٹر)سی اینڈ ڈبلیو گریڈ 18کے 10کرپٹ افسروں قومی خزانے کے 6ارب روپے ہڑپ کرنے کے باوجود بھی اپنی سیٹوں پر براجمان جبکہ اینٹی کرپشن میں درج مقدمات اور سینکڑوں انکوائریاں التواء کا شکارہیں ۔تفصیلات کے مطابق سی اینڈ ڈبلیو کے گریڈ 18کے کرپٹ افسران جن میں افتخار احمد چودھری (ٹیکنیکل آفیسر چیف انجینئر پنجاب بلڈنگ ڈیپارٹمنٹ ساؤتھ زون لاہور)کیخلاف کرپشن کے 10مقدمات جن میں مقدمہ نمبر10/10اینٹی کرپشن مظفر گڑھ، مقدمہ نمبر2/2009میانوالی ، مقدمہ نمبر7/10میانوالی ،36/2009ء بھکر، مقدمہ نمبر10/13ریجن سرگودھا، مقدمہ نمبر75/12ریجن سرگودھا، مقدمہ نمبر179/18ساہیوال ،ارشدمحمود الحسن (ڈپٹی ڈائریکٹر ون)چیف انجینئر پنجاب پلاننگ اینڈ ڈیزائن لاہور کیخلاف مقدمہ نمبر44/2016گوجرانوالہ، مقدمہ نمبر28/2013سرگودھا، زاہد اشفاق (ڈپٹی ڈائریکٹر ون)چیف انجینئر پنجاب ہائی ویز ڈیپارٹمنٹ نارتھ زون لاہور کیخلاف مقدمہ نمبر47/13،48/13،49/13بہاولپور، سید اطہر حسین بخاری (ایکسیئن آن ڈیپوٹیشن)راولپنڈی ڈویلپمنٹ اتھارٹی ،راولپنڈی کے خلاف مقدمہ نمبر2/14،75/12سرگودھا ، رانا غلام دستگیر (ایکسیئن )بلڈنگ ڈویژن حافظ آباد کے خلاف مقدمہ نمبر8/18،بہاولپور 1/16لودھراں ،46/17شیخوپورہ ،احمد ندیم خان (ایکسیئن )بلڈنگز ڈویژن جھنگ کیخلاف انکوائری نمبر840/12او795/12مظفرگڑھ ،فداحسین (معطل ایکسیئن )کے خلاف ایف آئی آر نمبر59/15اوکاڑہ ،8/16راجن پور،نذیر احمد خان (ایکسیئن)بلڈنگز ڈویژن نارووال کیخلاف انکوائری نمبر 601/2016، 366/2017،117/18 ،1405/16ساہیوال جبکہ مقدمہ نمبر41/2015پاکپتن،اشفاق حسین (ڈپٹی ڈائریکٹر)ایل اینڈ ایس،ڈائریکٹر پی اینڈ دی پنجاب پلاننگ اینڈ ڈیزائن ڈیپارٹمنٹ لاہور کیخلاف انکوائری نمبر159/14بہاولپوراور اعجاز احمد (ایکسیئن)ہائی ویزڈویژن سرگودھا کیخلاف انکوائری نمبر 94/2017، 302/2017، 29/2018،79/2018سرگودھا زیرالتواء ہیں ،حالانکہ اینٹی کرپشن ڈیپارٹمنٹ نے ان میں کئی مقدمات پر جوڈیشل ایکشن بھی منظور کررکھا ہے ۔علاوہ ازیں کئی کیسز زیر انکوائری ہیں ،ان افسران نے قومی خزانے کے تقریباً 6ارب روپے خورد برد کررکھے ہیں اور ڈویلپمنٹ کے کاموں میں کنٹریکٹر کیساتھ ساز باز کرکے ناقص مٹیریل کا استعمال کیا جوثابت ہونے پر اینٹی کرپشن نے مقدمات درج کرتو لئے مگر اینٹی کرپشن کے ٹیکنیکل افسران نے ان سے مبینہ طور پر لاکھوں روپے رشوت وصول کرکے مذکورہ تمام مقدمات کوزیرالتواء کررکھا ہے جبکہ سی اینڈ ڈبلیو کے اعلیٰ افسران نے بھی ان کرپٹ افسران کو تحفظ فراہم کرکے اہم عہدوں پر فائز کررکھا ہے جس کی وجہ سے ان کرپٹ افسران کے خلاف اینٹی کرپشن ڈیپارٹمنٹ کارروائی کرنے کی بجائے چپ سادھ رکھی ہے تاہم محکمہ اینٹی کرپشن کا کہنا ہے کہ اب نئے ڈی جی کی تعیناتی ہوئی ہے جنہوں نے زیرالتواء مقدمات کو فوری طور پر نمٹانے کے احکامات صادر کئے ہیں ۔

کمیونیکیشن اینڈ ورکس/گھپلے

مزید : صفحہ آخر

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...