عوام پی ٹی آئی کی کارکردگی سے مایوس ہو گئے : شاہد خٹک

عوام پی ٹی آئی کی کارکردگی سے مایوس ہو گئے : شاہد خٹک

نوشہرہ(بیورورپورٹ)عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی رہنما اور پی کے 63, 64 کے نامزد امیدوار شاہد خٹک نے کہا ہے کہ عوام تحریک انصاف کی کارکردگی سے مایوس ہوگئے ہیں قوم کو عمران خان کا فحاش اور پرویز خٹک کا کرپٹ چہرہ سامنے آگیا ہے قوم کے ساتھ تبدیلی کا جو وعدہ کیاگیاتھا وہ وعدہ، وعدہ ہی رہا وعدہ ایفا نہ ہوسکا پختون قوم کودھوکہ دینے والے مداری سیاستدانوں کا2018 کے عام انتخابات 25 جولائی کے دن جنازہ نکال کر اسی شہر دفنادیں گے جہاں سے ان کے آباؤ اجداد آئے تھے آنے والا دور اے این پی کا ہے 2018 کے الیکشن میں خیبرپختونخوا میں پی ٹی آئی کا نام ونشان تک نظر نہیں آئے گا عوام پی ٹی آئی کا اصل چہرہ پہچان چکا ہے اور اب ان کے تبدیلی کے جھوٹے وعدوں اور نعروں میں آنے والے نہیں آنے والے الیکشن میں اے این پی پورے صوبے میں کلین سویپ کرکے پی ٹی آئی کا صوبے سے مکمل خاتمہ کرے گی اے این پی کارکردگی کی بنیاد پربھرپورکامیابی حاصل کرکے اس صوبے کی تقدیر بدل دے گی ان خیالات کااظہار انہوں نے بدرشی، نوشہرہ کینٹ، نوشہرہ کلاں، حکیم آباد، ڈھیری کورونہ، مانکی شریف، رسالپور میں انتخابی مہم کے سلسلے میں عوامی اجتماعات سے خطابات کے دوران کیا انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی کی سابقہ حکومت اس صوبے کے عوامی کی فلاح وبہود کیلئے کچھ نہ کرسکی پشاور کو بی آر ٹی کی آڑ میں کھنڈرات میں تبدیل کردیا ہے صوبے کا خزانہ خالی کردیا ہے اور صوبے کو 365ارب روپے کا مقروض بنادیا ہے جو کہ ایک ریکارڈ ہے یہ کیسی تبدیلی ہے صوبہ مالی خسارے سے دوچار ہے انہوں نے کہا کہ آئے روز اے این پی میں عوام کا جوق درجوق شمولیتی سلسلے سے یہ ثابت ہوگیا ہے کہ عوامی نیشنل پارٹی حقیقی معنوں میں اس صوبے کے عوام کے فلاح وبہبود اور حقوق کے حصول کی واحد سیاسی جماعت ہے انہوں نے کہا کہ اے این پی نے باچا خان کے زمانے سے لیکر آج تک صرف پختون قوم کی بقاء سا لمیت اور حقوق کے حصول کی جنگ لڑی ہے جس میں عوامی نیشنل پارٹی اپنی سابقہ دور حکومت میں امیرحیدرخان ہوتی کی قیادت میں کامیاب ہوچکی ہے اس صوبے کو خیبرپختونخوا کے نام سے اپنی پہچان دینا سرفہرست ہے اسی طرح صوبہ خیبرپختونخوا میں تعلیم کے میدان میں یونیورسٹیاں، کالجز اور سکولوں کی تعمیر سے اس صوبے کی نہ صرف پسماندگی دور ہورہی ہے بلکہ عوام کو بہتر روزگار بھی میسر ہوگیا ہے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر