حضرت امام جعفر صادق نے بد ترین دور آمریت میں علم و آگہی کے چراغ روشن کئے۔ علامہ سید ابوالحسن تقی

حضرت امام جعفر صادق نے بد ترین دور آمریت میں علم و آگہی کے چراغ روشن کئے۔ ...

راولپنڈی (جنرل رپورٹر) مطلعِ امامت کے چھٹے آفتاب حضرت امام جعفر صادق علیہ السلام کے شہادت کے سلسلے میں قائدملتِ جعفریہ آغاسیدحامدعلی شاہ موسوی کے اعلان کردہ عشرہِ صادقِ آل محمد ؑ کی مجالس و ماتمداری کا سلسلہ سوموار کو بھی جاری رہا۔راولپنڈی ریجن میں مذہبی و ماتمی تنظیموں اوردینی اداروں کے زیراہتمام مساجد ،امامبارگاہوں اور عزاخانوں میں منعقدہ پروگراموں میں علمائے کرام،ذاکرین اورواعظین نے سیرتِ امام صادق ؑ پر تفصیلی روشنی ڈالی ۔تحریک نفاذفقہ جعفریہ راولپنڈی ریجن کے صدرعلامہ سیدابوالحسن مطلوب تقی نے دربارسخی شاہ پیاراکاظمیہ میں مجلس صادق ؑ سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ خانوادہ رسالت کے عظیم سپوت حضرت امام جعفر صادق نے بد ترین دور آمریت میں معاشرے کو دین محمدی کا گہوارہ بنانے کیلئے علم الہیٰ کے وہ چراغ روشن کئے جن کی روشنی سے آج بھی پورا عالم منور ہے ۔انہوں نے کہا کہ موجودہ افراط و تفریط اور انتشار و افتراق کے نازک دور میں جبکہ پوری انسانیت شیطانی قوتوں کے حصار میں ہے اور ہر کوئی مال دنیا اور اقتدار کی ہوس میں مبتلا ہے امام صادق ؑ کے کردار و عمل کی پیروی کر کے اطاعت خالق اور خدمت مخلوق کے ذریعے اطمینان قلب کی دولت حاصل کی جاسکتی ہے ۔انہوں نے کہا کہ صادق ؑ آل محمد ؐ نے غیر مذہب علماء اور دانشوروں کے سوالات کے تسلی بخش جوابات دے کر دین الہیٰ کی لاج رکھی چنانچہ جب ایک دہریے نے اسلام پر اعتراض کرتے ہوئے سوال کیا کہ خداوندِ عالم نے شیطان کو اپنے بندوں پر کیوں قابو دیا ہے کہ وہ اکیلا ساری خلقت کو گمراہ کررہا ہے اوراُسے کوئی روک نہیں پاتا تو امام علیہ السلام نے فرمایا کہ شیطان کے اختیار کی دو صورتیں ہیں ،خدا کے مقابلے میں یا بندوں کے مقابلے میں؟آپ ؑ نے وضاحت فرمائی کہ اگر اُس کا اختیار خدا کے مقابلے میں ہوتا تو خدائی کو خطرہ ہوتا اور خدا اُسے یہ اختیار نہ دیتا لیکن ظاہر ہے کہ اُس کے اختیار سے خدا پر کوئی اثر نہیں پڑتا وہ خدا کو کوئی فائدہ پہنچا سکتا ہے نہ نقصان ،رہ گیا بندوں کے مقابلے میں اختیار تو یہاں بھی اتنا ہی اختیار ہے کہ ابلیس مخلوق خدا کے دلوں میں وسوسہ پیدا کرسکتا ہے جبر نہیں کرسکتااور وسوسہ کا مقابلہ کرنے کیلئے اللہ نے عقل دے دی ہے۔اب اگر کوئی عقل سے کام نہ لے اور شیطان کے وسوسہ میں آجائے تو وہ خود بھی ایک شیطان ہے،اس میں خدا کا کیا قصور ہے۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر