آصف زرداری کو گرفتار کیا جائے گا یا نہیں؟ ایف آئی اے نے واضح اعلان کر دیا

آصف زرداری کو گرفتار کیا جائے گا یا نہیں؟ ایف آئی اے نے واضح اعلان کر دیا
آصف زرداری کو گرفتار کیا جائے گا یا نہیں؟ ایف آئی اے نے واضح اعلان کر دیا

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) وفاقی تحقیقاتی ادارے (ایف آئی اے) نے منی لانڈرنگ کیس میں سابق صدر اور پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) کے شریک چیئرمین آصف علی زرداری اور ان کی ہمشیرہ فریال تالپور کو فوری گرفتار نہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

یہ بھی پڑھیں۔۔۔’’ اب ہم نوازشریف کے ساتھ عدالت جائیں گے اور ۔ ۔ ۔‘‘ بلوچستان کے وکلاء نے تہلکہ خیز اعلان کردیا، مشکلات میں گھرے نوازشریف کیلئے بالآخر خوشخبری آگئی 

ایف آئی اے بے نامی اکاؤنٹ سے منی لانڈرنگ کیس میں 32 افراد کے خلاف تحقیقات کررہی ہے اور اسی سلسلے میں آصف زرداری کے قریبی ساتھی حسین لوائی کو گزشتہ دنوں گرفتار کیا گیا جبکہ سابق صدر اور ان کی ہمشیرہ فریال تالپور کا نام بھی سپریم کورٹ کی ہدایت پر ایگزیکٹ کنٹرول لسٹ(ای سی ایل) میں ڈالا جاچکا ہے جس کے بعد دونوں کے بیرون ملک جانے پر پابندی ہے۔

ایف آئی اے نے تحقیقات کیلئے 7 رکنی کمیٹی تشکیل دی ہے جبکہ سپریم کورٹ نے اسی کیس میں سابق صدر آصف زرداری اور فریال تالپور کو 12 جولائی کو طلب کرلیا ہے۔ نجی ٹی وی جیو نیوز کے مطابق سپریم کورٹ کے بلانے سے پہلے ایف آئی اے سندھ نے سابق صدر آصف زرداری ان کی ہمشیرہ فریال تالپور کو نوٹس جاری کردیئے ہیں۔

ایف آئی اے انسپکٹر محمد علی ابڑو کی جانب سے منی لانڈرنگ کیس کے سلسلے میں نوٹس جاری کیے گئے ہیں اور دونوں شخصیات کو پوچھ گچھ کیلئے ایف آئی اے سٹیٹ بینک سرکل میں کل 11 جولائی کو طلب کیا گیا ہے۔ایف آئی اے کے مطابق آصف زرداری اور فریال تالپور کو ایک ساتھ صبح 10 بجے طلب کیا گیا ہے۔

ایف آئی اے حکام کا بتانا ہے کہ آصف زرداری کو زرداری گروپ لمیٹیڈ کے شیئر ہولڈر اور فریال تالپور کو بطور زرداری گروپ کی ڈائریکٹر طلب کیا گیا ہے۔ایف آئی اے کے مطابق فریال تالپور کونوٹس کلفٹن بلاک 5 میں ان کی رہائش گاہ اور آصف علی زرداری کو نوٹس بلاول ہاؤس بھیجا گیا ہے۔

مزید : قومی /ڈیلی بائیٹس /علاقائی /اسلام آباد