جے یو آئی کی اے پی سی،اٹھارویں ترمیم کے خلاف اقدام پر مشترکہ جدوجہد کرنے پر اتفاق

جے یو آئی کی اے پی سی،اٹھارویں ترمیم کے خلاف اقدام پر مشترکہ جدوجہد کرنے پر ...
جے یو آئی کی اے پی سی،اٹھارویں ترمیم کے خلاف اقدام پر مشترکہ جدوجہد کرنے پر اتفاق

  

کراچی(ڈیلی پاکستان آن لائن)جمعیت علمائے اسلام ف کے تحت کراچی میں آل پارٹی کانفرنس (اے پی سی) ہوئی جس میں اٹھارویں ترمیم کے خلاف کسی بھی اقدام پر مل کر جدوجہد کرنے پر اتفاق کیاگیا۔نیشنل فنانشل کمیشن (این ایف سی) ایوارڈ پر بھی کوئی کٹوتی قبول نہ کرنے کا اعلان کیا گیا جبکہ اداروں کی نجکاری کو بھی مسترد کردیا گیا۔مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ حکومت کے 5 سال پورے کرنے کی بات قوم کو بد دعا دینے کے مترادف ہے، ایک انڈے کو نکالنے سے کچھ نہیں ہوگا پورا ٹوکرا خراب ہے۔کراچی میں کل جماعتی کانفرنس میں راشد سومرو نے مشترکہ اعلامیہ پڑھتے ہوئے کہا کہ آل پارٹیز یہ سمجھتی ہے کہ موجودہ وفاقی حکومت وفاقی پارلیمانی نظام کی مخالف ہےاور اس ترمیم کو ختم کرکے صوبوں کو وفاق کے دستِ نگر کرکے صوبائی خودمختاری پر شب خون مارنا چاہتی ہے،اٹھارھویں کے خلاف سازش کی گئی تو تمام جماعتیں مل کر احتجاج کریں گی، این ایف سی ایوارڈ میں کمی قبول نہیں، مشترکہ مفادات کونسل کے اجلاس تواتر سے منعقد کئے جائیں۔ اعلامیے میں مزید کہا گیا کہ معیشت پر بوجھ بننے والے قرضے نہ لیے جائیں، سیاسی کارکنوں کے اغوا، قتل اور میڈیا پر قدغن کی شدید مذمت بھی کی گئی.آل پارٹیز نے ملک میں ہونے والی کرپشن خصوصی طور پر چینی ، آٹا ، ادویات اور پیٹرول پر گہری تشویش کا اظہار کرتے ہوئےمافیاز کو فوری طور پر گرفتار کرکے کیفر کردار تک پہنچایا جائے۔کے الیکٹرک ،ہیسکو اور سیپکو کی جانب سےشہر کراچی سمیت صوبہ سندھ کےاندربدترین لوڈشیڈنگ کی بھرپور مذمت کرتےہیں اور سمجھتےہیں وفاقی حکومت سندھ میں 18، 18گھنٹے کی لوڈ شیڈنگ سے صنعتی مسائل کے ساتھ ساتھ عوام کو مشکلات میں مبتلا کر رہے  ہیں جسے فی الفور ختم کیا جائے۔یہ آل پارٹیز کانفرنس اس بات کا آعادہ کرتی ہے کہ ملک کو اس کے حقیقی منتخب پارلیمنٹ، اسمبلیاں اور نمائندے ہی ملک کو بحرانوں سے نکال سکتے ہیں اس لئے پارلیمنٹ کی سپرمیسی کوبرقرار رکھا جائے۔

مزید :

قومی -