ندیم جوزف کے قاتل گرفتار نہ کئے جانے کیخلاف مظاہرہ، ہڑتالی کیمپ

ندیم جوزف کے قاتل گرفتار نہ کئے جانے کیخلاف مظاہرہ، ہڑتالی کیمپ

  

اسلام آباد (خصوصی رپورٹ) پشاور ٹی وی کالونی سواتی گیٹ میں ندیم جوزف کو قتل اور خاندان کے دیگر افراد کو فائرنگ کرکے شدید زخمی کرنے والے بااثر افراد کو تاحال گرفتار نہ کیا جانا اور پولیس کی طرف سے روائتی سستی و نااہلی کا مظاہرہ کیے جانے کیخلاف ورثہ اور راولپنڈی اسلام آباد کی مسیحی کمیونٹی کا نیشنل پریس کلب اسلام آباد کے سامنے احتجاجی بھوک ہڑتالی کیمپ لگا دیا گیا بھوک ہڑتالی کیمپ میں شریک وحید جاوید پیارا ایڈووکیٹ، سماجی شخصیت بشارت کھوکھر، متاثرہ خاندان کے ورثہ اور راولپنڈی اسلام آباد سے تعلق رکھنے والے مختلف سیاسی سماجی رہنماؤں کا کہنا ہے کہ ملک پاکستان کو بنانے میں مسیحیوں کا ایک اہم کردار ہے مگر بدقسمتی سے ہماری قربانیوں کو کبھی یاد نہیں رکھا گیا ان کا کہنا تھا کہ ندیم جوزف کو مسیحی ہونے کی سزا دی گئی ہے آج ندیم جوزف کے قاتل آزاد گھوم رہے ہیں اور اس کے گھر والوں کو دھمکیاں دے رہے ہیں کہ اگر کیس کی پیروی کی یا اس گلی سے گھر نہ چھوڑا تو خاندان کے باقی افراد کا بھی حشر ندیم جوزف جیسا ہوگا بھوک ہڑتالی کیمپ کے شرکاء نے وزیراعظم عمران خان، وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا، چیف جسٹس سپریم کورٹ،اور آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ سے مطالبہ کیا کہ ندیم جوزف کے خاندان کو تحفظ و انصاف فراہم کیا جائے، اور پولیس کی سستی و نااہلی کا نوٹس لیکر ایف آئی آر میں دہشت گردی کی دفعات شامل کرکے ندیم جوزف کے بااثر قاتلوں کو قرار واقعی سزادی دی جائے تاکہ اس حوالے سے مسیحیوں میں پایا جانے والا احساس محرومی ختم ہو۔

ندیم جوزف

مزید :

پشاورصفحہ آخر -