پٹواری کی ملی بھگت سے بااثر شخصیات کا شہریوں کے زمینوں پر قبضہ

پٹواری کی ملی بھگت سے بااثر شخصیات کا شہریوں کے زمینوں پر قبضہ

  

چارسدہ(بیو رو رپورٹ)پٹواری کی ملی بھگت سے بااثر شخصیات کا شہریوں کے زمینوں پر قبضہ۔ قبضہ مافیا نے اسلحہ کی نوک پر کھڑی فصلوں پر ٹریکٹر چلا دی۔عدالت سے حکم امتناعی کے باوجود بااثر قبضہ مافیا کو پولیس کی اشیر باد حاصل ہے۔ زمینوں م پر غیر قانونی قبضہ نہ روگا گیا تو بچوں سمیت وزیر اعلی ہاؤس کے سامنے احتجاج کرینگے۔ ان خیالات کا اظہار تنگی کے رہائشی جلال ا لدین،فخرالدین اور دیگر نے چارسدہ پریس کلب میں پریس کانفرنس کے بعد پریس کلب کے سامنے احتجاجی مظاہرے سے خطابک کر تے ہوئے کیا۔ اس موقع پر ان کا کہنا تھا کہ ان کے کھیتوں کے قریب سرکاری ارضی موجود ہے لیکن علاقہ پٹواری نے پیسے لیکر یہ زمین آفتاب عالم اور میر عالم خان جو کہ علاقہ کے خوانین ہیں ان کے نام منتقل کر لی ہے۔اب ایک طرف تو اس بااثر شخصیات نے سرکاری زمین پر قبضہ کر لیا ہے دوسری جانب وہ ہماری آباؤاجداد کی زمین پر بھی قبضہ کرنے کی کوشش کر رہے ہیں جبکہ گزشتہ روز قبضہ مافیاں کے اہلکاروں نے اسلحہ کی زور پر اس نے ہمارے کھڑی فصلوں پر ٹریکٹر چلا کرنقصان پہنچا دیا جس کے خلاف ہم نے مقامی عدالت سے حکم امتناعی حاصل کر لی ہے جس میں عدالت نے پولیس کو فوری طو ر پر سرکاری زمین پر قبضہ کرنیو الے گروپ پر کام بند کرنے سمیت ہماری کھڑی فصلوں کو نقصان سے بچانے کی ہدایت کی ہے لیکن بااثر قبضہ مافیاں پولیس کے تعاون سے تاحال سرگرام ہے اورگزشتہ روز انہوں نے اسلحہ کے نوک پر ہمارے زمینوں پر کھڑے گنے کی تیار فصل پر ٹریکٹر چلا کر برباد کر دیا ہے۔ اس حوالے سے ان کا مزید کہنا تھا کہ حلقہ پٹواری وقار خان ان بااثر قبضہ مافیاں سے ملا ہوا ہے اور اب تک علاقہ میں کئی جگہ پر اس نے متعدد افراد کی زمینیں ان بااثر خاندان کے نام کئے ہیں جن کے خلاف لوگوں نے ڈپٹی کمشنر کو کئی درخواستیں بھی جمع کی ہیں لیکن ان پر کسی قسم کی کاروائی نہیں ہوئی ہے۔ اس حوالے سے ان کا مزید کہنا تھا کہ حال ہی میں پٹواری نے پیسے لیکر جو زمین آفتاب عالم اور میر عالم خا ن کی نام کی ہے وہ ایک پرانی مٹی کی ڈھیری ہے جس میں ان خوانین نے زبردستی نواردات ڈھونڈنے کا کام بھی شروع کیا ہے جو کہ غیر قانونی اقدام ہے اور علاقہ کے خوانین چاہتے ہیں کہ اس ڈھیری کے اردگرد تمام زمینوں پر قبضہ کیا جائے اس لئے اب یہ لوگ زبردستی ہمارے آباؤاجداد کی زمینوں پر قبضہ کرنا چاہتے ہیں۔ اس حوالے سے انہوں نے متعلقہ حکام سے فوری طو ر پر عدالتی حکم پر عمل درآمد یقینی بنانے اور متعلقہ پٹوای کے خلاف قانونی کاروائی کا مطالبہ کرتے ہوئے خبر دار کیا ہے کہ اگر ہمارے زمینوں پر غیر قانونی قبضہ کے عمل کو نہ روکا گیا تو بچوں سمیت وزیراعلیٰ ہاوسں کے سامنے احتجاجی مظاہرہ کرینگے۔بعدازیں متاثرین نے متعلقہ پٹواری کے خلاف چارسدہ پریس کلب کے سامنے اپنا احتجاج بھی ریکارڈ کر لیا۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -