خیبر،دریائے کابل سے د و طالب علموں میں سے ایک کی نعش برآمد

  خیبر،دریائے کابل سے د و طالب علموں میں سے ایک کی نعش برآمد

  

خیبر (بیوروپورٹ)دریا کابل میں ڈوبنے والے شلمان قوم کے دو طالب علموں میں ایک کی نعش چار دن بعد علاقہ ملاگوری میں دریا کابل سے نکال لی گئی ریسکیو1122کے ٹیموں سمیت مقامی غوطہ خوردوسرے نعش کو ڈھونڈنے کیلئے کوشش کررہے ہیں گز شتہ چار دنوں سے پورے علاقے پر غم کے بادل چھائے ہوئی ہیں لوئے شلمان عمائدین کے مطابق کہ پانچ دن پہلے لنڈیکوتل کے دور افتادہ علاقہ لوئے شلمان میں پانچ دوست گر می کی شدت کم کرنے کیلئے دریا کابل میں نہا رہے تھے کہ اس دوران دو دوست راشد اور امجد جو نویں جماعت کے طالب علم تھے دریا کابل کے بے رحم چھپوں کی نذر ہو گئی مقامی غوطہ خوروں نے سر توڑ کوششوں کے بعد لاشوں کو نہیں سکی اس دوران دوسرے دن ریسکیو 1122 کے ٹیمیں پہنچ گئی انہوں نے بھی کو شش کی لیکن نعشیں نہیں مل سکی ریسکیو کی ٹیموں نے مردان چارسدہ اور نوشہرہ میں لاشوں کو نکالنے اور ڈھونڈنے کیلئے سر توڑ کوشش کی لیکن کامیاب نہیں ہو سکی گز شتہ روز یعنی چار دن بعد مقامی غوطہ خوروں نے رات گیارہ بجے علاقہ ملاگوری ڈب سے راشد کی نعش دریا سے نکال لی گئی جبکہ عینی شاہدین کے مطابق دوسر ے نعش کو بھی دیکھا گیا لیکن بوٹ نہ ہونے کی وجہ سے دوسرے لاش کو ریسکیو نہیں کیا گیاگز شتہ پانچ دنوں سے پورا علاقہ سوگوار ہے سینٹر الحاج تاج محمد آفریدی غمزادہ خاندانوں کے ساتھ غم میں شریک ہونے کیلئے شلمان گئے اور ریسکیوٹیموں اور مقامی غوطہ خوروں کو ایک لاکھ روپے نقد دئیے اور طعام کا بندوبست بھی کیا جبکہ وفاقی وزیر نو رالحق قادری کے نمائندے بھی پہنچ گئے اور دونوں خاندانوں کو پچا س،پچاس ہزار روپے دئیے جبکہ پہلے دن سے اے سی محمد عمران شلمان میں موجود تھے اور لاشوں کو ڈھونڈنے مقامی لوگوں کے ساتھ تعاون کر رہے تھے بلکہ ڈی سی خیبر نے دونوں خاندانوں کو تین،تین لاکھ چیکس دئیے

مزید :

پشاورصفحہ آخر -