بچوں، بوڑھوں کے مویشی منڈیوں میں داخلے پر پابندی، لوگوں کو غیر ضروری سفر سے روکنے کیلئے عید پر صرف 3چھٹیوں کا فیصلہ، مزید 79افراد جاں بحق، پنجا ب سے 7شہروں کے مختلف علاقوں میں سمارٹ لاک ڈاؤن نافذ

        بچوں، بوڑھوں کے مویشی منڈیوں میں داخلے پر پابندی، لوگوں کو غیر ضروری ...

  

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر،آئی این پی)عید الاضحی کے موقع پر قربانی کے جانوروں کی خرید و فروخت کیلئے مویشی منڈیوں کے قیام سے متعلق حکومت نے اہم ہدایات جاری کرتے ہوئے ایس او پیز پر عمل درآمد لازمی قرار د ے دیا ہے۔تفصیلات کے مطابق حکومت نے مویشی منڈیوں کو شہر سے دور قائم کرنے کے احکامات جاری کردیئے ہیں اور اس سلسلے میں تمام ضلعی انتظامیہ کو کو تحریری طور پر آگاہ بھی کردیا ہے۔کورونا وائرس کی عالمی وبا کے باعث سال2020کی عیدالاضحی باقی عیدوں سے بہت مختلف ہے، عید الاضحی کے موقع پر کورونا سے بچا ؤکے لیے چند احکامات پرعمل ضروری قرار دیا گیا ہے۔حکومتی احکامات میں کہا گیا ہے کہ جانوروں کی خریداری کے لیے حکومت کی مقررہ مویشی منڈی جائیں، ضرورت کے تحت صرف وہ افراد منڈی جائیں جنہوں نے خود قربانی کرنی ہو۔زیادہ عمر والے افراد اور بچوں کو بکرا منڈیوں میں نہ لے کر جائیں، مویشی منڈی جاتے ہوئے ماسک اور دستانوں کا استعمال لازمی کریں، اندرون شہر میں کسی مویشی منڈی یا فرد سے جانور خریدنے سے گریز کریں۔حکومت نے شہریوں سے اپیل کی ہے کہ شہری انفرادی قربانی کے بجائے اجتماعی قربانی کو ترجیح دیں، قربانی مقرر ہ مذبح خانوں، خیراتی، کمیونٹی تنظیموں میں اور آن لائن کی جائے اس کے علاوہ قربانی کا گوشت ضرورت مندوں میں تقسیم کیا جائے، عید کے موقع پر دعوتوں کا اہتمام بالکل نہ کریں، قربانی کے جذبے کے تحت آئیں ہم دوسروں کے لئے ایک مثال بنیں، خود بھی محفوظ رہیں اوردوسروں کو بھی محفوظ بنائیں۔دوسری طرف وفاقی حکومت کا عیدالاضحیٰ پر 3 چھٹیاں دینے کا پلان سامنے آیا ہے جو ممکنہ طور پر 31 جولائی سے شروع ہونگی۔ عوام کو غیر ضروری سفر سے روکنے کے لیے اضافی تعطیلات نہیں دی جائیں گی۔ذرائع کے مطابق کورونا صورتحال میں حکومت کا عیدالاضحی کی چھٹیوں سے متعلق فیصلہ سامنے آیا ہے، صرف تین دن سرکاری چھٹیاں دی جائیں گی، رواں برس عیدالاضحیٰ جمعے کے روز ہونے کا امکان ہے جس پر عید کی تین تعطیلات ممکنہ طور پر جمعہ، ہفتہ اور اتوار کو ہوں گی۔کورونا ایس و پیز پر عمل درآمد کروانے کے تحت فیصلہ کیا گیا ہے کہ شہریوں کو غیر ضروری سفر سے روکنے کے لئے اضافی تعطیلات نہیں دی جائیں گی، عید الاضحی کے تین دن ہی سرکاری طور پر تعطیلات ہوں گی۔

عید ایس او پیز

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر، مانیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں) وزیراعظم عمران خان نیاسلام آباد میں آئسولیشن اور وبائی امراض کے جدید ہسپتال کا افتتاح کر دیا۔ این ڈی ایم اے نے 250 بیڈز پر مشتمل طبی مرکز 40 دن میں مکمل کیا۔وزیراعظم عمران خان کو ا آئسولیشن ہسپتال اور انفیکشنز ٹریٹمنٹ سینٹر سے متعلق بریفنگ دی گئی۔ اس مو قع پر آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ، چینی سفیر، وفاقی وزراء شبلی فراز، اسد عمر و دیگر بھی تھے۔ جدید سہولیات سے آراستہ 250 بستروں پر مشتمل یہ ہسپتال بہترین سازو سامان اور ادویات کے ساتھ کورونا وائرس سے متاثرہ مریضوں کے لئے استعمال ہوگا۔ آئسولیشن ہسپتال کی تعمیر سے اسلام آباد کے ہسپتالوں پر مریضوں کا دباؤ کم ہوگا۔اس موقع پر وزیراعظم کا کہنا تھا مختصر مدت میں جدید ہسپتال کا قیام قابل تعریف ہے، زیادہ لوگوں کے جمع ہونے پر وائرس تیزی سے پھیلتا ہے، وبا کا پھیلاؤ کم ہو رہا ہے وزیراعظم عمران خان نے اپنے خطاب میں عوام سے عید الاضحی سادگی سے منانے کی اپیل کی۔وزیراعظم کا کہنا ہے کہ شہری گزشتہ عید کی طرح اس عید پر بھی لاپروائی نہ برتیں، اسمارٹ لاک ڈان کے مثبت نتائج سامنے آ رہے ہیں، کورونا کا گراف نیچے جا رہا ہے، اگر عید الاضحی پر بھی لاپروائی برتی تو وائرس بہت تیزی سے پھیلے گا۔دریں اثناوزیراعظم عمران خان نے کراچی میں لوڈشیڈنگ کا نوٹس لیتے ہوئے گورنر سندھ سمیت دیگر حکام کو ہدایت کی ہے کہ کے الیکٹرک اور عوامی مسائل کا حل ممکن بنایا جائے وزیراعظم سے گورنر سندھ عمران اسماعیل، وفاقی وزیر اسد عمر اور شہزاد قاسم نے خصوصی ملاقات کی جس میں صوبے میں کورونا کی صورتحال اور کے الیکٹرک سمیت دیگر ایشوز پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ذرائع کا کہنا ہے کہ اس موقع پر وزیراعظم نے تینوں شخصیات کو ہدایت کی کے الیکٹرک انتظامیہ سے جلد ملاقات کرکے لوڈشیڈنگ اور عوامی مسائل کا حل ممکن بنایا جائے۔ان کا کہنا تھا کہ کورونا وبا اور لاک ڈاؤن کی مشکل صورتحال کے باوجود قلیل مدت میں جدید ہسپتال بنانے پر این ڈی ایم اے کو پوری قوم کی جانب سے خراج تحسین پیش کرتا ہوں۔ اس ہسپتال میں بیڈز، عملہ سمیت تمام جدید سہولیات موجود ہیں۔انہوں نے کہاکہ عوام کی جانب سے عیدالفطر پر لاپرواہی کا مظاہرہ کیاگیا تھا جس کے باعث کورونا وبا تیزی سے پھیلی، ہسپتالوں،فرنٹ لائن ورکرز ڈاکٹرز نرسز پر دباؤ بڑھا،اموات میں اضافہ ہوا۔عمران خان کا کہنا تھا کہ حکومت نے کورونا کی روک تھام کیلئے لاک ڈاؤن لگایا، این سی او سی نے ہدایات جاری کیں جس پر عملدرآمد کیلیے صوبائی حکومتوں نے تعاون کیا جس کے باعث جولائی میں وبا کی شدت ہماری توقع سے کم رہی۔ اس وقت ہم ان ممالک میں شامل ہیں جہاں کورونا وبا کی شدت نیچے جا رہی ہے۔ دنیا کے دیگر ممالک کے مقابلہ میں پاکستان میں کم اموات ہوئی ہیں۔وزیراعظم نے عوام سے اپیل کی کہ وہ عیدالاضحی پر عیدالفطر کی طرح لاپرواہی کا مظاہرہ نہ کریں کیونکہ زیادہ لوگوں کے جمع ہونے سے کورونا تیزی سے پھیلتاہے۔ عید قربان پر لاپرواہی سے کورونا پھیلے گا۔ حکومت نے اس عید کے حوالے سے جامع ایس او پیز وضع کیے ہیں۔انہوں نے عوام سے اپیل کی کہ وہ قوم، ملک اور اپنے بزرگوں اس بیماری سے بچانے کیلئے عید سادگی سے منائیں۔ انہوں نے کہاکہ اگر ہم احتیاط کریں گے تو دنیا کے مقابلہ میں اس مشکل صورتحال میں بہتر انداز سے نکلیں گے۔

عمران خان

اسلام آباد، لاہور، کراچی (سٹاف رپورٹر، نیوز ایجنسیاں) ملک بھرمیں کورونا سے مزید 79 افراد جاں بحق ہو گئے جبکہسندھ میں کورونا کیسز ایک لاکھ سیتجاوز کر گئیاموات کی مجموعی تعداد 5033 ہوگئی جب کہ نئے کیسز سامنے آنے کے بعد مریضوں کی تعداد 242787 تک پہنچ گئی اب تک پنجاب میں 1955، سندھ میں 1677 اور خیبر پختونخوا میں 1063 افراد جاں بحق ہو چکے ہیں جب کہ اسلام آباد میں 142، بلوچستان میں 125، آزاد کشمیر میں 40 اور گلگت بلتستان میں 31 افراد کا انتقال ہوا ہے۔جمعرات کے روز ملک بھر سے کورونا کے مزید 3058 کیسز اور 79 ہلاکتیں سامنے آئیں جن میں سندھ سے 1538 کیسز اور 40 اموات، پنجاب سے 988 کیسز 26 ہلاکتیں، خیبر پختونخوا سے 354 کیسز اور 9 ہلاکتیں، بلوچستان سے 47 کیسز ایک ہلاکت، اسلام آباد 81 کیسز 2 ہلاکتیں، آزاد کشمیر 40 کیسز اور گلگت بلتستان سے 10 کیسز اور ایک ہلاکت رپورٹ ہوئی ہے۔پنجاب میں کورونا کے 988 کیسز اور 26 ہلاکتیں رپورٹ ہوئی ہیں جن کی تصدیق پی ڈی ایم اے کی جانب سے کی گئی ہے۔صوبائی ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹی کیمطابق پنجاب میں کورونا کے مریضوں کی کل تعداد 84587 اور ہلاکتیں 1955 ہوچکی ہیں۔پی ڈی ایم اے کے مطابق پنجاب میں اب تک کورونا سے 51450 مریض صحتیاب ہوچکے ہیں۔وفاقی دارالحکومت سے کورونا کے مزید 81 کیسز اور 2 ہلاکتیں سامنے آئی ہیں جس کی تصدیق سرکاری پورٹل پر کی گئی۔آزاد کشمیر سے کورونا کے مزید 40 کیسز سامنے آئے ہیں جو سرکاری پورٹل پر رپورٹ کی گئی ہیں۔پورٹل کے مطابق آزاد کشمیر میں کورونا کے کل کیسز کی تعداد 1459 اور اموات کی تعداد 40 ہے۔سرکاری پورٹل کے مطابق آزاد کشمیر میں کورونا سے متاثرہ 828 افراد صحت یاب ہو چکے ہیں۔گلگت بلتستان سے کورونا کے مزید 10 کیسز اور ایک ہلاکت سامنے آئی ہے جو سرکاری پورٹل پر رپورٹ کی گئی ہے۔پورٹل کے مطابق علاقے میں کیسز کی کل تعداد 1606 اور اموات 31 ہے۔گلگت میں کورونا سے اب تک 1272 افراد صحتیاب بھی ہوچکے ہیں۔بلوچستان سے جمعرات کو کورونا کے 47 کیسز اور ایک ہلاکت سامنے آئی جس کے بعد صوبے میں کورونا کے کیسز کی کل تعداد 11099 اور ہلاکتیں 125 ہوگئی ہیں۔۔صوبہ پنجاب کے7شہروں کے مختلف علاقوں میں سمارٹ لاک ڈاؤن شوع ہو گیا جس کانوٹیفکیشن جاری کر دیا گیا جن شہروں کے علاقوں میں کورونا وائرس کے پھیلاؤ کے پیش نظر سمارٹ لاک ڈاؤن نافذ کیا جا رہا ہے ان میں لاہور، ملتان، فیصل آباد، گوجرانوالہ، سیالکوٹ، گجرات اور راولپنڈی شامل ہیں۔سمارٹ لاک ڈاؤن 24 جولائی تک نافذ رہے گا۔ تاہم ان علاقوں میں اشیائے ضروریہ میسر ہوں گی۔ پنجاب حکومت کی جانب سے جاری ہونے والے نوٹیفیکیشن کے مطابق سیل ہونے والے مقامات سے کوئی شخص غیر ضروری باہر یا اندر نہی?ں جا سکے گا۔سیل ہونے والے مقامات کے اندر پبلک اور پرائیوٹ ٹرانسپورٹ کا استعمال بند ہوگا۔ ضروری کام کے لیے ٹرانسپورٹ پر صرف ایک شخص کو آمدورفت کی اجازت ہوگی۔لاک ڈاؤن والے مقامات میں تمام سرکاری اور نجی دفاتر، شاپنگ مالز، بند رہیں گے۔ سرکاری ملازم، ہیلتھ پروفیشنلز، ججز اور میڈیا پرسنز کو آمدورفت کی اجازت ہوگی۔ایسے علاقوں میں کسی قسم کا مذہبی اجتماع بھی نہیں ہوگا۔ سیل ہونے والے علاقوں میں ریسٹورنٹس کے ٹیک اوے، بینکوں کو کھلا رکھنے کی اجازت ہوگی۔ حکمہ پرائمری اینڈ سکینڈری ہیلتھ کئیر نے سیل ہونے والے علاقوں کی فہرست بھی جاری کر دی ہے۔

کورونا ہلاکتیں

مزید :

صفحہ اول -