کورونا پھیلانے پر امریکہ کیخلاف 20ارب ڈالر ہرجانے کا دعوی، نوٹس جاری

کورونا پھیلانے پر امریکہ کیخلاف 20ارب ڈالر ہرجانے کا دعوی، نوٹس جاری

  

اسلام آباد،لاہور (شِنہوا)لاہور کی ایک سول عدالت نے پاکستان میں امریکی سفارتخانے اور دیگر کو کوویڈ-19 کی وبا پھیلانے کے الزام پر ایک شہری کی جانب سے 20ارب امریکی ڈالر ہرجانے کے دعوے پر نوٹس جاری کردیئے۔عدالتی کارروائی کے دوران کمرہ عدالت میں موجود لاہورکے سینئر وکیل وسیم یوسف خان نے بتایا کہ مدعی رضا علی نامی شخص جو حال ہی میں کوویڈ-19 کے مرض سے صحت یاب ہوا ہے نے اپنی درخواست میں الزام عائد کیا ہے کہ امریکہ اس وبا ء کے پھیلنے کا واحد ذمہ دار ہے جس سے اسے،اس کے خاندان اور ملک کو نقصان پہنچا۔مدعی نے اپنی درخواست میں لاہور میں امریکی قونصل جنرل،امریکی وزیر دفاع کو قونصل جنرل کے توسط سے فریق بنایا ہے اور کہا ہے کہ اس کے خاندان کے افراد اس وباء کی وجہ سے تکلیف میں مبتلا ہوئے،انہیں اپنی صحت پر سمجھوتہ کرنا پڑا اورہوسکتا ہے وہ دوبارہ معمول کی زندگی بسر نہ کرسکیں۔درخواست گزار نے الزام عائد کیا کہ یہ وائرس دنیا بھر میں پھیل گیا کیونکہ مدعا علیہ عالمی برادری کیساتھ اپنے فرا ئض کی انجام دہی میں ناکام رہے اور اربوں انسانوں کی جانوں کو خطرہ میں ڈالا۔درخواست گزار کا موقف ہے کہ امریکہ میں اس وائرس کا وسیع پھیلا اور امریکی قیادت کا بے وقوفانہ موقف،پاکستان سمیت پوری دنیا میں اس وائرس کے پھیلا کی بنیادی وجہ ہے۔مدعا علیہان پاکستا ن سمیت پوری دنیا میں ہونیوالی اموات، بدحالی، اور معاشی تباہی کے ذمہ دار ہیں اور یہ کہ امریکی انتظامیہ کوویڈ-19کیخلاف جنگ میں بین الاقوامی اتحاد اور عالمی حکمت عملی میں رکاوٹیں پیدا کرتی رہی ہے۔ عدالت مدعا علیہان کو 20ارب امریکی ڈالرز ہرجانے کے طور پر ادا کرنے کا حکم دے۔ سول عدالت کے جج نے مدعا علیہان کو نوٹس جاری کرتے ہوئے 7اگست 2020کو عدالت میں پیش ہونے کا حکم جاری کر دیا۔

امریکہ ہرجانہ نوٹس

مزید :

صفحہ اول -