انتظامیہ حواس باختہ، عارضی بکر منڈی پوائنٹس کابروقت قیام ناممکن

  انتظامیہ حواس باختہ، عارضی بکر منڈی پوائنٹس کابروقت قیام ناممکن

  

ملتان(سپیشل رپورٹر)سرکاری اداروں کی کام چوری اور روایتی ہٹ دھرمی کی روش کے باعث جنوبی پنجاب کے سب سے بڑے شہر ملتان میں عید الاضحی کے موقع پر عارضی بکر منڈی پوائنٹس کے بروقت قائم نہ کرنے کا خدشہ پیدا ہوگیا ہے ذرائع کے مطابق پنجاب(بقیہ نمبر24صفحہ6پر)

حکومت نے امسال کورونا وائرس کی وجہ سے ملک بھر میں جاری لاک ڈاؤن کے پیش نظر عارضی بکر منڈیوں کے قیام کے لیے باقاعدہ ایس او پی جا ری کر دیے ہیں اور تمام ڈویژنل، ضلعی انتظامیہ کو شہری حدود سے کم از کم پانچ کلو میٹر دور عارضی بکر منڈی پوائنٹس قائم کرنے،کورونا وائرس سے بچاؤ کے لیے تمام ضروری حفاظتی تدابیر اختیار کرنے اور سماجی فاصلوں کو برقرار رکھتے ہوئے قربانی کے جانوروں کی خریداری کے لئے سیل پوائنٹس کے قیام کے احکامات جاری کیے ہیں معلوم ہوا ہے کہ ضلعی انتظامیہ نے ملتان شہر کے چاروں اطراف 8 عارضی بکرمنڈی پوائنٹس قائم کرنے کا فیصلہ کیا ہے اور حکومتی ہدایات کے مطابق تمام عارضی بکر منڈی پوائنٹس شہری حدود سے پانچ کلومیٹر دور قائم ہونا ہیں اور اس سال تمام پوائنٹس میٹرو پولیٹن کارپوریشن کی حدود سے باہر تحصیل کونسل ملتان کے ایریا میں قائم ہوں گے۔ ذرائع کے مطابق تحصیل کونسل انتظامیہ عارضی بکر منڈی پوائنٹس کے قیام میں ٹال مٹول سے کام لے رہی ہے باوثوق ذرائع کے مطابق چیف آفیسر تحصیل کونسل اقبال خان کے عارضی بکر منڈی پوائنٹس کے قیام کے حوالے سے ہاتھ پاؤں پھول چکے ہیں اور انہوں نے بیماری کا بہانہ بنا کرچھٹی کے لئے پر تولنا شروع کر دیے ہیں اور اس صورتحال میں عارضی بکر منڈی پوائنٹس کا بروقت قیام ناممکن نظر آرہا ہے عوامی،سماجی حلقوں نے کمشنر ملتان ڈویژن اور ڈپٹی کمشنر سے اس صورتحال کا فوری نوٹس لیتے ہوئے عارضی بکر منڈی پوائنٹس کا بروقت قیام یقینی بنانے کا مطالبہ کیا ہے۔

ناممکن

مزید :

ملتان صفحہ آخر -