رحیم یارخان:میڈیکل سٹوروں پرنشہ آور میڈیسن کی فروخت، ہیلتھ آفیسر غائب

  رحیم یارخان:میڈیکل سٹوروں پرنشہ آور میڈیسن کی فروخت، ہیلتھ آفیسر غائب

  

رحیم یارخان(نمائندہ پاکستان) حکومت پنجاب کی ہدایات کے(بقیہ نمبر35صفحہ6پر)

باوجودضلعی حکومت نے نشہ آورادویات فروخت کرنے والے دکانداروں کے خلاف کوئی کارروائی نہ کی ضلع بھرمیں میڈ یکل ا سٹوروں پر نشہ اور ادویات کی فروخت جاری ہے جس سے نو جوان نسل تباہ ہورہی ہے ان میڈ یکل اسٹور ز پر ادویات کی اڑ میں نشہ اور ا نجکشنوں، گو لیوں اور سیر پ فروخت کئے جا رہے ہیں جن کے استعمال سے نو جوان نشہ میں ڈوب جا تی ہے نشی انجکشن خرید کر خود لگا تے ہیں اور غلط انجکشن لگنے سے کئی نوجوان مر چکے ہیں اور کئی ایک معذور ہو کر سڑکوں پر بھیک ما نگ ر ہے ہیں میڈ یکل اسٹوروں پرنشہ اور ادویات محکمہ صحت کے افسران کی ملی بھگت سے فروخت ہو رہی ہیں اور آج تک موت بیچنے والوں کے خلاف کارو ائی نہیں کی گئی جس سے ان کے حو صلے بڑھ ر ہے ہیں اور وہ بلا خوف دو کانوں پر موت بیچ ر ہے ہیں‘ ذرائع کے مطابق چیف ایگزیکٹوافسرہیلتھ اورڈرگ انسپکٹرزنے مبینہ طور پرماہانہ بھتہ وصول کرکے ان سٹورزکی سرپرستی شروع کررکھی ہے جس کی وجہ سے ڈپٹی کمشنرسمیت دیگراعلی سطحی احکامات کے باوجودکریک ڈاؤن کے نام پرفرضی رپورٹس تیارکی جارہی ہیں‘شہر ی حلقوں نے اعلی حکام سے موت بیچنے والوں کے خلاف کاروائی کا مطا لبہ کیا ہے تا کہ نو جوان نسل کو تبا ہی سے بچا یا جا سکے جبکہ ضلعی انتظامیہ کے مطابق عوامی شکایات پرنشہ آورادویات فروخت کرنے والوں کے خلاف کارروائیاں کی جارہی ہیں۔

غائب

مزید :

ملتان صفحہ آخر -