24گھنٹے کے اندر آٹے کی مقررہ نرخ پر دستیابی یقینی بنائے جائے

24گھنٹے کے اندر آٹے کی مقررہ نرخ پر دستیابی یقینی بنائے جائے

  

لاہور(جنرل رپورٹر) وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار نے صوبہ بھر میں 24 گھنٹے کے اندر آٹے کی مقررہ نرخ پر دستیابی کی ڈیڈلائن دے دی ہے۔ وزیراعلیٰ عثمان بزدار نے نے آٹے کے تھیلے کی مقرر کردہ قیمت پر فروخت یقینی بنانے کیلئے متعلقہ محکموں کو ہدایات جاری کرتے ہوئے کہا کہ محکمہ خوراک اور انتظامیہ 24 گھنٹے کے اندر مقررکردہ نرخ پر آٹے کی فروخت کیلئے ہر ضروری انتظامی اقدام اٹھائیں اور متعلقہ محکمے آٹے کی سپلائی اور سرکاری قیمت پر ہر صورت عملدرآمد کرائیں۔ انہوں نے کہا کہ ذخیرہ اندوز مافیا کو عوام کا استحصال نہیں کرنے دوں گا۔مقرر کردہ قیمتوں سے زائد نرخوں پر آٹے کی فروخت کی اجازت نہیں دی جا سکتی۔ اوور چارجنگ کرنے والوں کے خلاف قانون کے مطابق کارروائی ہوگی۔ وزیراعلیٰ عثمان بزدار نے کہا کہ فلور ملوں کو سرکاری گندم کی ریلیز کے بعد آٹا تھیلا کی سرکاری قیمت پر عوام کی فراہمی میں تعطل برداشت نہیں کروں گا۔حکومت کی جانب سے کئے گئے فیصلوں پر سختی سے عملدرآمد کرایا جائے اور انتظامی ادارے ذخیرہ اندوزوں کے خلاف اپنی ذمہ داریاں پوری کریں۔ انہوں نے کہا کہ محکمہ خوراک کے حکام اور انتظامی آفیسرز فیلڈ میں نکلیں اور مارکیٹوں میں جا کر صورتحال کا جائزہ لیا جائے۔ سردار عثمان بزدار سے صوبائی وزیر ڈیزاسٹر مینجمنٹ میاں خالد محمود نے ملاقات کی جس میں مون سون سیزن کے پیش نظر ممکنہ سیلاب اور اربن فلڈنگ سے نمٹنے کیلئے کئے گئے انتظامات پر بات چیت ہوئی- وزیراعلیٰ عثمان بزدارنے پی ڈی ایم اے کوموثرانتظامات کی ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ پنجاب کے ہر ضلع کا ایمرجنسی پلان مرتب کیا جائے گا- پی ڈی ایم اے ضروری سامان اور آلات کی بروقت خریداری یقینی بنائے- ویئر ہاؤسز میں ضروری آلات او رسامان کی وافر سٹاک موجود ہونا چاہیے- وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار کی زیرصدارت وزیراعلیٰ آفس میں اجلاس منعقد ہوا جس میں محکمہ صحت کے ترقیاتی منصوبوں کی ترجیحات متعین کرنے کے حوالے سے تجاویز کا جائزہ لیا گیا۔ اجلاس میں صوبے میں کورونا وباء کا پھیلاؤ روکنے کیلئے کئے گئے اقدامات اور ہسپتالوں میں مریضوں کے علاج معالجے کیلئے انتظامات کا بھی جائزہ لیا گیا۔ وزیراعلیٰ عثمان بزدار نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پنجاب میں سب سے زیادہ فوکس شعبہ صحت کی بہتری پر ہے۔ نئے مالی سال میں ہیلتھ کے بجٹ میں خاطرخواہ اضافہ کیا گیا ہے۔ لاہور سمیت پنجاب میں 5 مدر اینڈ چائلڈ ہسپتال بنائے جا رہے ہیں۔ انہوں نے ہدایت کی کہ عوام کی ضروریات کو مد نظر رکھتے ہوئے صحت کے منصوبوں کی ترجیحات متعین کی جائیں اور محروم اور پسماندہ علاقوں میں صحت کی بہترین سہولتوں کی فراہمی یقینی بنائی جائے۔ وزیراعلیٰ عثمان بزدار نے کہا کہ پنجاب حکومت نے موثر اقدامات کرکے کورونا وباء کے پھیلاؤ کو بہت حد تک روکا ہے۔پنجاب میں 9 جولائی تک کورونا کے 51,450 ہزار مریض صحت یاب ہوچکے ہیں۔پنجاب میں ریکارڈ 5 لاکھ64 ہزار 893 کورونا ٹیسٹ کئے جا چکے ہیں۔

وزیراعلیٰ پنجاب

لاہور)جنرل رپورٹر) وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار پنجاب اسمبلی گئے۔ وزیراعلیٰ عثمان بزدار اور سپیکر پنجاب اسمبلی چودھری پرویز الٰہی کی سپیکر چیمبر میں ملاقات ہوئی جس میں باہمی دلچسپی کے امور، سیاسی صورتحال اور پنجاب اسمبلی کے نئے بلاک کی تعمیر پر پیش رفت کے بارے میں تبادلہ خیال کیا گیا۔ ملاقات میں دونوں رہنماؤں نے پراپیگنڈا کرنے والے عناصر کا مل کر مقابلہ کرنے پر اتفاق کرتے ہوئے کہا کہ ہر صورت اکٹھے مل کر صوبے کے عوام کی خدمت جاری رکھیں گے اور عوامی خدمت کے سفر کو مزید تیزی سے آگے بڑھائیں گے۔ وزیراعلیٰ عثمان بزدار نے کہا کہ تنقید کرنے والے عناصر پیچھے رہ جائیں گے اور وزیراعظم عمران خان کی قیادت میں نیا پاکستان آگے بڑھتا جائے گا۔تنقید کرنے والے عناصر مخصوص ایجنڈے کے تحت پراپیگنڈا کر رہے ہیں۔ پنجاب میں پاکستان مسلم لیگ (ق) کے ساتھ بہترین ورکنگ ریلیشن شپ ہے۔ وزیراعلیٰ عثمان بزدار نے کہا کہ تحریک انصاف کی حکومت نے عوامی ترجیحات کا درست تعین کیا ہے اور وزیراعظم عمران خان وژن کے مطابق پنجاب حقیقی تبدیلی کی راہ پر گامزن ہے۔ عوام کی فلاح و بہبود کے وہ کام کر رہے ہیں جو سابق حکمران برسوں میں نہ کر پائے۔ ماضی میں غلط ترجیحات کی وجہ سے صوبے کے عوام کا بے پناہ نقصان کیاگیا۔ سپیکر پنجاب اسمبلی چودھری پرویزالٰہی نے کہا کہ اختلافات کی خواہش رکھنے والوں کے ارمان پورے نہیں ہوں گے۔ سابق دور میں صوبے کا حلیہ بگاڑا گیا۔ ماضی کی حکومت نے غلط پالیسی سے صوبے کو دیوالیہ کیا۔ فلاح عامہ کے منصوبوں میں تاخیر کا نقصان صوبے کے عام آدمی کو ہوا۔ انہوں نے کہا کہ موجودہ دور عوام کا اپنا دور ہے۔ تحریک انصاف کے اتحادی ہیں اور مل کر فلاح عامہ کیلئے کام کرتے رہیں گے۔عوام کی خدمت ہمارا مشن ہے۔ صوبائی وزیر قانون راجہ بشارت بھی اس موقع پر موجود تھے۔ دریں اثنا وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار اور سپیکر پنجاب اسمبلی چودھری پرویزالٰہی کی زیرصدارت اسمبلی کے کمیٹی روم میں خصوصی اجلاس ہوا جس میں پنجاب اسمبلی کی نئی عمارت اور ایم پی اے ہاسٹل کی تعمیر کے منصوبے پر پیش رفت کا جائزہ لیا گیا۔ وزیراعلیٰ عثمان بزدارنے پنجاب اسمبلی کی نئی عمارت کے کام کو جلد مکمل کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے متعلقہ حکام کو ستمبر کے آخر تک کام مکمل کرکے نئی بلڈنگ پنجاب اسمبلی کے حکام کے حوالے کرنے کی ڈیڈ لائن دی۔ انہوں نے کہا کہ فنڈز کے باوجود نئی عمارت کے کام میں تاخیر کا کوئی جواز نہیں۔ وزیراعلیٰ نے بلڈنگ کا کام مقررہ مدت میں مکمل نہ کئے جانے پر برہمی کا اظہار کیا اور کہا کہ کورونا کے باعث کچھ امور میں جو تاخیر ہوئی ہے، سابق حکومت اس اہم منصوبے کو 10 سال تک نہ روکتی تو ہمیں کورونا کے باعث ہوٹل میں بجٹ سیشن نہ کرنا پڑتا۔ سابق حکمرانوں نے فلاح عامہ کے منصوبوں میں ذاتی پسند و ناپسند کو ترجیح دی۔ وزیراعلیٰ نے ہدایت کی کہ پنجاب اسمبلی کی نئی عمارت کے ساتھ ایم پی اے ہاسٹل کو بھی جلد مکمل کیا جائے۔چودھری پرویزالٰہی نے کہا کہ نئی عمارت اور ہاسٹل کی تعمیر کے حوالے سے وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار کی سپورٹ کے شکرگزار ہیں۔ ماضی کے حکمرانوں نے جان بوجھ کر نئی عمارت کے منصوبے کو تاخیر کا شکار کیا۔تاخیر کے باعث عوام کے پیسے کا ضیاع ہوا اور تعمیراتی لاگت بھی بڑھی۔کورونا کے باعث کام میں تعطل آیا لیکن اب اس منصوبے کو مزید تیزی سے آگے بڑھانے کی ضرورت ہے۔ اجلاس میں بریفنگ کے دوران بتایا گیا کہ این سی اے کی جانب سے جولائی کے آخر تک چھت پر میناکاری کا کام مکمل ہوجائے گاجبکہ مسجد کو اگست میں کھول دیا جائے گا۔ ایم پی اے ہاسٹل کی عمارت کی بیسمنٹ میں 600 گاڑیوں کی پارکنگ کی سہولت موجود ہوگی۔ صوبائی وزیر قانون راجہ بشارت، چیئرمین منصوبہ بندی و ترقیات، سیکرٹری تعمیرات و مواصلات، سیکرٹری خزانہ، سیکرٹری پنجاب اسمبلی، وزیراعلیٰ کے سیکرٹری کوآرڈینیشن اور متعلقہ حکام نے اجلاس میں شرکت کی۔

ملاقات

مزید :

صفحہ اول -