سندھ سوشل سکیورٹی کا 6ارب سے زائدکا فاضل بجٹ منظور

سندھ سوشل سکیورٹی کا 6ارب سے زائدکا فاضل بجٹ منظور

  

کراچی (سٹاف رپورٹر)سندھ ایمپلائز سوشل سیکورٹی انسٹی ٹیوشن(سیسی)کا بجٹ اجلاس وزیر تعلیم و محنت سندھ و چیئرمین گورننگ باڈی سیسی سعید غنی کی زیرصدارت منعقد ہوا. جس میں مالی سال 2020-21 کے بجٹ کی منظوری دی گئی۔ بجٹ کمشنر سیسی محمد اسحاق مہر نے پیش کیا۔ اس موقع پر سیکریٹری محنت سندھ عبدالرشید سولنگی، ممبران گورننگ باڈی محمدخان ابڑو، عبدالواحدشورو، شاہ جہاں شیخ، ناصرعزیز منصور، وائس کمشنر سیسی صفدرحسین رضوی، میڈیکل ایڈوائزرڈاکٹرعمرچنہ، ڈائریکٹر پروکیورمنٹ ڈاکٹرسعادت میمن، ڈائریکٹر فنانس عامرعطا، ڈائریکٹر کنٹری بیوشن اینڈ بینیفٹ عنبرین کامل اور ڈائریکٹرآئی ٹی حامد علی کے علاوہ دیگرافسران بھی موجود تھے۔ بجٹ اجلاس میں آن لائن شرکت کرنے والوں میں ممبران گورننگ باڈی زاہد سعید، انجینئر عبدالفتح شیخ، ساجد جونیجو اور کرامت علی شامل تھے۔بجٹ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے وزیر محنت سندھ سعید غنی نے کہا کہ سوشل سیکورٹی اسکیم کا بنیادی مقصد محنت کشوں اور ان کے لواحقین کو بہتر سے بہتر سہولتوں کی فراہمی ہے اور اس کے لئے سیسی کے آئندہ مالی سال 2020-21کے بجٹ میں تمام پیرا میٹرز کو سامنے رکھتے ہوئے حقیقی معنوں میں محنت کش دوست بجٹ بنانے پر توجہ دی گئی ہے۔ وزیر محنت نے کہا کہ رواں مالی سال کے بجٹ میں محنت کشوں کی فلاح و بہبود کیلئے 4ارب 82کروڑ 92لاکھ 25ہزار روپے مختص کئے گئے ہیں، جن میں سے صرف طبی سہولتوں کی فراہمی پر 4ارب 70کروڑ 61لاکھ 78ہزار روپے خرچ کیے جائیں گے جو کہ کل اخراجات کا 73فیصد ہے۔ قبل ازیں بجٹ پیش کرتے ہوئے کمشنرسیسی محمداسحاق مہرنے کہاکہ چیئرمین گورننگ باڈی کی ہدایت پر بجٹ کو محنت کش دوست بنانے پر بھرپور توجہ مرکوز رکھی گئی ہے۔

مزید :

صفحہ اول -