اردن کی شہزادی ریاح بنت الحسین کی کورونا وائرس کی وجہ سے رکی ہوئی شادی بالآخر انجام پا گئی لیکن یہ کس ملک میں ہوئی ؟

اردن کی شہزادی ریاح بنت الحسین کی کورونا وائرس کی وجہ سے رکی ہوئی شادی بالآخر ...
اردن کی شہزادی ریاح بنت الحسین کی کورونا وائرس کی وجہ سے رکی ہوئی شادی بالآخر انجام پا گئی لیکن یہ کس ملک میں ہوئی ؟

  

لندن(مانیٹرنگ ڈیسک) اردن کی شہزادی ریاح بنت الحسین معروف برطانوی مصنف رولڈ ڈاہل کے پوتے نیڈ ڈونوین کے ساتھ رشتہ ازدواج میں منسلک ہو گئیں۔عرب نیوز کے مطابق 34سالہ شہزادی ریاح اور نیڈ کی منگنی گزشتہ سال 26اکتوبر کو ہوئی تھی اور ان کی شادی اردن میں رواں سال اپریل میں ہونا طے پائی تھی لیکن کورونا وائرس کی وجہ سے مو¿خر ہو گئی اور اب برطانیہ میں مختصر سی تقریب میں قریبی رشتہ داروں اور دوست احباب کی موجودگی میں شہزادی ریاح اور نیڈ شادی کے بندھن میں بندھ گئے۔

رپورٹ کے مطابق شہزادی ریاح نے اپنی شادی کی تقریب کی تصاویر اپنے ٹوئٹر اکاﺅنٹ پر پوسٹ کی ہیں جن میں وہ سفید عروسی جوڑا پہنے اپنے دولہا کے ساتھ ہوتی ہیں۔ شہزادی ریاح نے اپنی ٹویٹ میں شادی کی مبارکباد دینے والوں کا شکریہ ادا کرتے ہوئے لکھا کہ ”اصل میں ہماری شادی اپریل میں اردن میں ہونی تھی لیکن کورونا وائرس کی وباءنے ہماری منصوبہ بندی کو ڈی ریل کر دیا۔ میرے شوہر کی فیملی کے لیے یہ محفوظ تھا کہ ہماری شادی برطانیہ میں ہی ہو جائے۔جب صورتحال بہتر ہو جائے گی تو ہم اپنی شادی کی ایک تقریب اردن میں بھی منعقد کریں گے۔“

واضح رہے کہ شہزادی ریاح اردن کے مرحوم بادشاہ حسین اور ملکہ نور کی صاحبزادی ہیں اور اردن کے موجود بادشاہ عبداللہ دوئم کی سوتیلی بہن ہیں۔ان کے 26سالہ دولہا نیڈ فری لانس صحافی ہیں جنہوں نے شہزادی کے ساتھ شادی کے لیے اسلام قبول کیا ہے۔ انہوں نے اپنا اسلامی نام ’فارس‘ رکھا ہے۔ اپنی ویب سائٹ پر فارس نے گزشتہ دنوں بتایا تھا کہ وہ عربی زبان بھی سیکھنے کی کوشش کر رہے ہیں۔

مزید :

برطانیہ -