یہ ہے بھارت، پورا دن ایمبولینس میں گھومنے کے باوجود علاج کی سہولت نہ ملنے پر حاملہ لڑکی پیٹ میں موجود بچے سمیت جاں بحق

یہ ہے بھارت، پورا دن ایمبولینس میں گھومنے کے باوجود علاج کی سہولت نہ ملنے پر ...
یہ ہے بھارت، پورا دن ایمبولینس میں گھومنے کے باوجود علاج کی سہولت نہ ملنے پر حاملہ لڑکی پیٹ میں موجود بچے سمیت جاں بحق

  

نئی دہلی(مانیٹرنگ ڈیسک) بھارت میں علاج کی سہولت نہ ملنے پر حاملہ لڑکی اور اس کے پیٹ میں موجود بچہ دونوں موت کے منہ میں چلے گئے۔ عرب نیوز کے مطابق یہ المناک واقعہ بھارتی دارالحکومت نئی دہلی میں پیش آیا ہے جہاں 30سالہ نیلم سنگھ کو اس کا شوہر پورا دن ایمبولینس میں لیے ایک سے دوسرے ہسپتال گھومتا رہا لیکن ہر ہسپتال نے نیلم کا علاج کرنے سے انکار کر دیا۔ وہ کئی گھنٹوں کی اس مصیبت میں اپنی اہلیہ کو 13مختلف ہسپتالوں میں لے کر گیا۔

رپورٹ کے مطابق بالآخر نیلم نے ایمبولینس میں ہی ایک ہسپتال کے باہر جان دے دی اور اس کے پیٹ میں موجود بچہ بھی دنیا میں آنے سے پہلے ہی ڈاکٹروں کے بے رحمی کی نذر ہو گیا۔رپورٹ کے مطابق نیلم سنگھ کا پہلے بھی ایک 6سالہ بیٹا تھا جو ان کے ساتھ ہی ایمبولینس میں دربدر گھومتا رہا اور اپنی ماں کو تکلیف سے کلبلاتے دیکھتا رہا۔ نیلم کے شوہرکا کہنا تھا کہ ”میں 12گھنٹے تک اپنی بیوی کو لے کر دہلی کی سڑکوں پر گھومتا رہا۔ یہ 12گھنٹے میرے لیے قیامت تھے۔ علاج نہ ملنے کی وجہ سے ہمیں جو صدمہ پہنچا ہے اور ہمارا جو نقصان ہوا ہے، تمام عمر اس کی تلافی نہ ہو پائے گی۔ میں نیلم کو لے کر 13ہسپتالوں میں گیا اور سب نے انکار کر دیا۔ کسی نے انکار کی وجہ تک نہیں بتائی۔“

مزید :

بین الاقوامی -