بھارت میں کورونا وائرس کے شبہ میں نوجوان لڑکی کو چلتی بس سے نیچے پھینک دیا گیا

بھارت میں کورونا وائرس کے شبہ میں نوجوان لڑکی کو چلتی بس سے نیچے پھینک دیا گیا
بھارت میں کورونا وائرس کے شبہ میں نوجوان لڑکی کو چلتی بس سے نیچے پھینک دیا گیا

  

نئی دہلی(مانیٹرنگ ڈیسک) کورونا وائرس کے خوف نے بھارت میں ایک اور لڑکی کی جان لے لی۔ ٹائمز آف انڈیا کے مطابق یہ واقعہ بھارتی ریاست اترپردیش میں پیش آیا ہے جہاں کورونا وائرس کے شبے میں 19سالہ لڑکی کو چلتی بس سے نیچے پھینک دیا گیا، جس سے اس کی موت واقع ہو گئی۔ اس لڑکی کا نام انشیکا یادو بتایا گیا ہے، جو نئی دہلی سے یو پی روڈویز کی بس میں سوار ہو کر اترپردیش کے شہر شکوہ آباد جا رہی تھی۔

راستے میں جب بس جمنا ایکسپریس وے پر سفر کر رہی تھی، انشیکا کو کھانسی آئی اور ساتھی مسافروں نے سمجھ لیا کہ اسے کورونا وائرس لاحق ہے۔ اس پر بس میں ایک ہاہاکار مچ گئی اور خوفزدہ مسافروں نے انشیکا کو چلتی بس سے نیچے پھینک دیا، جس سے وہ شدید زخمی ہو گئی اور 30منٹ بعد اس کی موت واقع ہو گئی۔ انشیکا کے گھروالوں کا کہنا ہے کہ تاحال پولیس نے ایف آئی آر بھی درج نہیں کی۔ پولیس والوں نے الٹا لڑکی موت کی وجہ دل کا دورہ قرار دے دی ہے۔ ایس ایس پی متھورا گوروگروور نے ٹائمز آف انڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا ہے کہ ”پوسٹ مارٹم میں لڑکی موت کی وجہ دل کا دورہ قرار دی گئی ہے۔تاہم واقعے کی تحقیقات کی جائیں گی۔“

مزید :

بین الاقوامی -کورونا وائرس -