خاور مانیکا کی استدعا مسترد، عدت کیس کی اپیلوں پر ایک ماہ کے اندر فیصلہ کرنیکا حکم برقرار

      خاور مانیکا کی استدعا مسترد، عدت کیس کی اپیلوں پر ایک ماہ کے اندر ...

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

                                                  اسلام آباد (آئی این پی) اسلام آباد ہائی کورٹ کے جسٹس میاں گل حسن اورنگزیب نے محفوظ شدہ فیصلہ سناتے ہوئے خاور مانیکا کی نظر ثانی درخواست خارج کردی۔ اسلام آباد ہائیکورٹ میں عدت کیس میں اپیل کا فیصلہ ایک ماہ میں کرنے کی ڈائریکشن پر خاور مانیکا کی نظرثانی کی درخواست پر سماعت جسٹس میاں گل حسن اورنگزیب نے کی۔ معاون وکیل خاور مانیکا نے عدالت سے استدعا کی کہ سینئر وکیل رضوان عباسی سپریم کورٹ میں مصروف ہیں، کیس میں کچھ دیر کا وقفہ کر دیں، سلمان اکرم راجہ نے کہا کہ خاور مانیکا کے وکیل نے لکھا ہے کہ وہ زیارت کیلئے عراق ایران جانا چاہتے ہیں، اس لیے ایک ماہ کی ڈائریکشن ختم کی جائے۔ جسٹس حسن اورنگزیب نے کہاکہ ساڑھے گیارہ بجے کیس دوبارہ ٹیک اپ کرینگے، رضوان عباسی آ گئے تو ان کے دلائل سنیں گے، اگر خاور مانیکا کے وکیل نہیں آتے تو ریکارڈ دیکھ کر فیصلہ کر دونگا۔ وکیل سلمان اکرم راجہ نے کہا کہ آج 9 جولائی ہے 12 جولائی فیصلہ کرنے کی ڈیڈلائن ہے، عدالت نے کیس کی سماعت میں وقفہ کر دیا۔ وقفے کے بعد سماعت میں اسلام آباد ہائی کورٹ کے جسٹس میاں گل حسن اورنگزیب نے محفوظ شدہ فیصلہ سناتے ہوئے خاور مانیکا کی نظر ثانی درخواست خارج کردی۔ جسٹس میاں گل حسن اورنگزیب نے سیشن کورٹ کو ایک ماہ کے اندر اپیلوں پر فیصلہ کرنے کا حکم برقرار رکھا۔ ہائی کورٹ پہلے ہی سیشن کورٹ کو مرکزی اپیلوں پر ایک ماہ میں فیصلہ کرنے کی ہدایت کرچکی ہے۔

عدت کیس

 اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں) بشریٰ بی بی کے سابق شوہر خاور مانیکا نے کہا ہے کہ عمران نے نکاح کے متعلق جھوٹ بولا، ہیرو کا اخلاقی لیول دیکھ لیں۔اسلام آباد پریس کلب میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے خاورمانیکا کا کہنا تھا کہ چودہ نومبرکومیں نے بشریٰ بی بی کوطلاق دی، بشریٰ بی بی کے بھائی کوبھی طلاق کا علم نہیں تھا،عمران خان کے نکاح پر کسی نے نہیں پوچھا ہمارے خلاف منفی پراپیگنڈا کیا گیا۔انہوں نے کہا کہ چار سال سے مجھے سوشل میڈیا پر برا بھلا کہا جارہا ہے، ہم نے اپنے خلاف باتوں کا کبھی جواب نہیں دیا آج اپنا موقف دینا چاہتا ہوں، یکم جنوری کوعمران خان کا نکاح ہوا اور7جنوری کونکاح سے انکارکیا گیا، مجھے سمجھ نہیں آرہی سابق وزیراعظم نے جھوٹ کیوں بولا، بڑے ہیرو کا اخلاقی لیول دیکھ لیں۔خاور مانیکا کا کہنا تھا کہ ہمیں یہ مغربی ممالک کی مثالیں دیتا ہے، اگرمغربی ممالک میں ایسا کوئی کام ہوتولوگ استعفیٰ دے دیتے ہیں، جھوٹ بول کرآج تک صفائیاں دے رہیہیں، ہم بحیثیت قوم کس طرف جارہے ہیں، عدت کوغلط بیانی کرکے چھپایا گیا ہے۔انہوں نے کہا کہ اگرطلاق ہوگئی توکیا برا تھا کہ نکاح کیلئے رک جاتے، بانی پی ٹی آئی نے7جنوری کونکاح کی تردید کی، 18فروری کودوسری بارنکاح کیا، آج ان کے کلا کی ٹیم محنت پرلگی ہے کہ39دن کی مدت ثابت کرنی ہے،کیس کو کیوں جلدی ختم کیا جارہا ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ کیا کسی نے علما سے پوچھا، شریعہ کورٹ سے بھی مشاورت نہیں کی گئی، بشریٰ بی بی کیساتھ 28سال گزارے ہیں، ہارجاؤں یا جیتوں فرق نہیں پڑتا، اسلامی قوانین پرعمل کرنا چاہیے

خاور مانیکا

مزید :

صفحہ اول -