گندم سکینڈل میں مجھے ملوث کیا جا رہا ہے،انوارالحق کاکڑ

 گندم سکینڈل میں مجھے ملوث کیا جا رہا ہے،انوارالحق کاکڑ

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

 اسلام آباد(آ ئی این پی)سابق نگران وزیراعظم انوار الحق کاکڑ نے کہا ہے کہ گندم سکینڈل میں مجھے اور میرے اہل خانہ کو ملوث کیا جا رہا ہے۔عوام کے حال پر رحم کیا جائے اور آئی پی پیز کے معاہدوں پر از سر نو جائزہ لیا جائے۔لوگوں کی چیخیں نکل رہی ہیں۔وہ منگل کی شام پارلیمنٹ ہاوس میں صحافیوں سے غیر رسمی گفتگو کر رہے تھے۔انوار الحق کاکڑ نے کہا کہ سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کا یہ کہنا کہ ہر سابق وزیراعظم کو جیل جانا پڑتا ہے،میں اس کو تسلیم نہیں کرتا ہوں کیونکہ میں نے کوئی ایسا جرم ہی نہیں کیا ہے ۔انہوں نے کہا کہ اگر بلوچستان کی ترقی کے لیے گزشتہ چند سالوں میں 500 ارب روپے سے زائد کی رقم لگائی گئی ہے تو اس کی بھی تحقیقات ہونی چاہیے۔فنڈز کا اگر غلط استعمال ہوا ہے تو ان لوگوں کے خلاف بھی گھیرا تنگ ہونا چاہیے۔گزشتہ کئی دہائیوں سے بلوچستان کا احساس محرومی ختم نہیں ہوا ہے۔انہوں نے کہا کہ پاکستانی صحافت کا سب سے بڑا المیہ یہ ہے کہ ہمارے ہاں تحقیق ختم ہو گئی ہیں۔ہم حقائق پر مبنی خبر کو نہیں چھاپتے ہیں۔گندم سکینڈل کے حوالے سے مجھ پر جو الزامات ہیں وہ سب جھوٹ کا پلندہ ہیں۔انہوں نے کہا کہ اس ملک کا بارڈر نظام بہتر کام کر رہا ہے اگر ملک کا بارڈر کا نظام نہیں ہوگا تو ریاست کا تصور ختم ہو جائے گا۔متعلقہ اتھارٹیز ریاست کے نظام کے ساتھ ساتھ بارڈر کا دفاع بھی کر رہی ہیں۔

انوارالحق کاکڑ

مزید :

صفحہ آخر -