گورنر سندھ کا بیرون ملک بچوں کو تعلیم کے اسکالر شپ دینے کا اعلان 

گورنر سندھ کا بیرون ملک بچوں کو تعلیم کے اسکالر شپ دینے کا اعلان 

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

                                                            کراچی (اسٹاف رپورٹر) گورنرسندھ کامران خان ٹیسوری نے کہا ہے کہ اب ہمیں اپنے نوجونوں کے مستقبل کے حوالہ سے بھی سوچنا چاہئے کہ انہیں معیار تعلیم کے لئے بیرون ممالک بھی بھیجا جائے تاکہ یہ نوجوان آگے چل کر ملک و قوم کی باگ دوڑ بہتر انداز میں سنبھال سکیں اس ضمن میں گورنر انیشیوٹیو کے تحت اسکالرشپ پروگرام کا آغاز کیا جارہا ہے اور اسے میں خود مانیٹرنگ کروں گا۔ ان خیالات کا اظہا ر انہوں نے گورنرہاؤس میں میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کیا۔ گورنرسندھ نے کہا کہ گورنرہاؤس میں کریئر کاؤنسلنگ کا گورنر ہاوس میں پہلا سیشن کراچکے ہیں، اسکالرشپ کے لیے بچوں کی معاونت کرنے کے لیے گورنر ہاؤس میں ایک سیل بھی قائم کردیا جائے گیا ہے اس پروگرام کے تحت ہم میرٹ پر نوجوانوں کو بیرون ملک تعلیم کے لیے بھجوائیں گے۔ گورنرسندھ نے مزید کہا کہ،سیدعابدی نے 15 ہزار بچے بچیوں کو اسکالر شپ پر بیرون ملک بھجوایا ہے،ہمیں یہ بات یاد رکھنی ہے کہ ہمیں پاکستان کا نام روشن کرنا ہے۔ انہوں نے مزیدکہا ہے کہ میں نے اپنی نامزدگی کے وقت اللہ سے یہی دعا کی تھی کہ اللہ مجھ سے ہر سیکٹر میں کام کروائے آج50ہزار نوجوانوں کو آئی ٹی کے مفت کورسز کرائے جارہے ہیں یہ نوجوان دوران تربیت ہی 200سے 400ڈالرز ماہانہ کمارہے ہیں۔انہوں نے مزید کہا کہ گورنر انیشیوٹیو کے تحت اچھا بزنس پروپوزل بنانے والے نوجونوں کو قرضہ حسنہ کے طور پر ایک لاکھ سے ایک کروڑ روپے بھی دیئے جارہے ہیں،گورنر ہاؤس سے اب تک 5لاکھ 80ہزا ر سے زائد مستحقین میں راشن بیگز تقسیم کئے جاچکے ہیں اور یہ سلسلہ آج بھی جاری ہے،جن کی بائیک چوری ہوتی ہے اور 6ماہ میں انہیں بائیک نہیں ملتی تو وہ ایف آئی آر دے کر ہم سے بائیک حاصل کررہا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ امید کی گھنٹی پر سائلیں اپنے مسائل بتاتے ہیں انہیں فوراً حل کیا جارہا ہے جس سے لوگوں میں اعتماد بڑھا ہے ان سارے کاموں میں سندھ حکومت یا گورنر ہاؤس کا ایک روپیہ بھی نہیں لگا یہ سارے کام مخیر دوستوں کے تعاون سے کئے جارہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ بیرون ممالک نوجوانوں کی نوکری کے لئے پورٹل بنادیا ہے جہاں پر نوجوان اپنی تعلیم کے کوائف جمع کرارہے ہیں اب انہیں مختلف ممالک کی زبانیں بھی سکھائی جائیں گی تاکہ وہ بیرون ملک نوکری حاصل کرسکیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ بلا تفریق کام کررہے ہیں اس وقت پاکستان کو معاشی چیلنجز درپیش ہیں ہر ایک نے اپنے اپنے حصہ کا کام کرنا ہوگا تبھی ہی ہم ان معاشی چیلنجز سے نبرد آزما ہو سکتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ پاکستان کی آج کی معاشی صورتحال بہت کمزور ہے آج ہمیں بہت سے مسائل کا سامنا ہے، یہاں سے اگر آپ بھی فری آئی ٹی کورس کرنا چاہتے ہیں ہم آپ کے ساتھ ہیں اگرآپ کو پڑھنے کے لیے بیرون ملک جانا ہے ہم آپ کے ساتھ کھڑے ہیں۔ گورنرسندھ نے کہا کہ عابدی صاحب اب آپ ان سب بچوں کو باہر تعلیمی اداروں میں بھجوائیں گے،ہر وہ کام جس میں سہولت فراہم کرسکتے ہیں وہ ہم کریں گے۔ایک سوال کا جواب دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ہم نے فرقوں اور قوموں میں بٹ کر صرف نقصان اٹھایا ہے،پہلے ہم ووٹ دیتے ہیں پھر سیاسی جماعتوں پر تنقید کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اس گورنر ہاؤس میں 22 لاکھ لوگ آکر دورہ کرچکے ہیں،آج یہ گورنر ہاؤس 24 گھنٹے عوام کے لیے کھلا ہوا ہے،ہم نے ایوان اور عوام کے درمیان جو گورنر ہاؤس کی دیوارتھی اسے گرا کر اس کی جگہ آئی ٹی گیٹ بنا دیا۔ ایک سوا ل کے جواب میں گورنرسندھ نے کہا کہ ایس آئی ایف سی کے تحت پاکستان میں ترقی و خوشحالی آئے گی۔انہوں نے کہا کہ ہمیں بچوں کے مستقبل کی طرف دیکھنا ہوگا یہی وقت کی اہم ترین ضرورت بھی ہے اب کچھ نہ کرنے کا کلچر ختم کرنا ہوگا عابدی جیسے لوگوں کو آگے آنا ہوگا۔ایک اور سوال کے جواب میں گورنرسندھ نے کہا کہ میرا کام ہے خدمت کرنا اور میں اپنے ہم وطنوں کے لئے یہ کام کرتارہوں گا۔سید عابدی نے طلباء کو اسکالر شپ کا طریقہ کار بتاتے ہوئے انہیں ویب سائٹ کے ذریعہ درخواست جمع کرانے اور بیرون ممالک کے تعلیمی اداروں کی معلومات حاصل کرنے کے ضمن میں آگاہ کیا۔ انہوں نے طلباء سے کہا کہ اچھی معیاری تعلیم حاصل کرنے کے لئے آپ کو شب و روز محنت کرنا ہوگی۔ انہوں نے مزید کہا کہ گورنر ہاؤس میں بھی طلباء کو آگاہی فراہم کرنے کے لئے سیل تشکیل دے دیا گیا طلباء اس سیل پر بھی معلومات حاصل کرسکتے ہیں۔