گرانٹس نہ ہونے سے محکموں کے آلات اپ ڈیٹ نہیں: شیری رحمان

گرانٹس نہ ہونے سے محکموں کے آلات اپ ڈیٹ نہیں: شیری رحمان

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

                                                                                                اسلام آباد(آن لائن)سینیٹر شیری رحمان کی زیر صدارت سینیٹ قائمہ کمیٹی برائے ماحولیاتی تبدیلی کا اجلاس ہوا سینیٹر شیری رحمان نے کہا کہ بارشوں کے علاوہ ہمیں دیگر ماحولیاتی تبدیلی کے بحرانوں کا سامنا ہے، گرانٹس نہ ہونے کی وجہ سے محکموں کے آلات اپ ڈیٹ نہیں، 2022 کے سیلاب کے بعد تمام فنڈز سیلاب متاثرہ علاقوں کو مختص کرلیے گئے، پی (بقیہ نمبر58صفحہ6پر)

ڈی ایم اے اور دیگر علاقائی اداروں کی صلاحیت کو بڑھانا ہوگا تاکہ وہ آفات کی روک تھام کر سکیں، ماحولیاتی تبدیلی کے تمام متعلقہ اداروں کو آپسی روابط اور مشترکہ حکمت عملی سے چیلنجزسے نمٹنا ہوگا اجلاس میں وزیر اعظم کی کوآرڈنیٹر برائے ماحولیاتی تبدیلیرومینہ خورشید،نیشنل ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹی کے چیئرمین لیفٹیننٹ جنرل انعام حیدر ملک، سیکرٹری وزارت ماحولیاتی تبدیلی، ڈی جی پاکستان میٹ ڈپارٹمنٹ اور دیگر حکام نے شرکت کی۔سینیٹر نسیمہ احسان، سینیٹر پلوشہ خان، سینیٹر منظور احمد کاکڑ، سینیٹر بشریٰ انجم بٹ، سینیٹر قرۃ العین مری، سینیٹر ڈاکٹر زرقا سہروردی تیمور اور سینیٹر شبلی فراز شریک ہوئے۔نیشنل ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹی کے چیئرمین لیفٹیننٹ جنرل انعام حیدر ملک نے حالیہ مون سون بارشوں کے حوالے سے بریفنگ دی۔چیئرپرسن شیری رحمان نے کہا کہ محکمہ ماحولیات کے آلات اپ ڈیٹ کرنے کیلئے بھاری فنڈز چاہیے تھے، 2022 کے سیلاب کے بعد تمام فنڈز سیلاب متاثرہ علاقوں کو مختص کرلیے گئے پاکستان کے ماحولیاتی چیلنجز کو مدنظر رکھتے ہوئے ہوئے ہمیں رزیلینس کی نئے سرے سے وضاحت کرنی ہوگیسندھ میں رزیلینٹ ہاؤسنگ پروگرام جاری ہے اسلام آباد میں مارگلہ کے جنگلات میں آگ لگنے کے واقعات تشویشناک ہیں، آگ کے واقعات کی روک تھام کیلئے سی ڈی اے اور اسلام وائلڈ لائیف مینجمنٹ بورڈ کو مل کر اقدامات کرنے چاہیے۔ 

شیری رحمن