غازی ممتاز حسین قادری کی فی الفور رہا کیا جائے،ا شرف آصف جلالی

غازی ممتاز حسین قادری کی فی الفور رہا کیا جائے،ا شرف آصف جلالی

  

لا ہور (سٹاف رپورٹر)سربراہ تحریک صراطِ مستقیم پاکستان ڈاکٹر محمدا شرف آصف جلالی نے کہا ہے کہ سابق گورنر پنجاب سلمان تاثیر نے تحفظِ ناموس رسالت ﷺ کے قانون کو بلیک لاء کہنے اور مبینہ گستاخ خاتون کی حمایت کی وجہ سے مرتد ہو چکا تھا۔295c کی مخالفت پر حکومت پاکستان کا فرض تھا کہ حکومت اسے گرفتار کرتی ۔ حکومت کی غفلت کی وجہ سے غازی ممتاز قادری نے غازی علم الدین شہید کا کردار ادا کیا۔ قانون شریعت کے مطابق گستاخ رسول کا خون رائگاں اور ضائع ہے اور پاکستان کاقانون قرآن و سنت کے تابع ہے اس بنیاد پر غازی ممتاز حسین قادری کی فی الفور رہا کیا جائے ۔ ممتاز قادری کیس پر حکومتی پُر اسرار خاموشی قابل مذمت ہے۔ جب ملک میں امتیازی سلوک ہوگا تو عوام اپنے فیصلے خود کرنے پر مجبور ہوگی۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے اعلیٰ سطح اجلاس سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ حکومت بتائے کہ ریمنڈڈیوس اور غازی ممتاز قادری کیلئے پاکستان کا قانون مختلف کیوں ہے؟گستاخ رسول کے خلاف آئین اور قانون کو حرکت میں لانا حکومتی ذمہ داری تھی حکومت اگر گستاخ رسو ل کے خلاف کاروائی نہیں کرے گی تو ہر گلی سے ممتاز قادری پیدا ہوں گے۔اہلسنت وجماعت آئین اور قانون کی بالادستی پر یقین رکھتے ہیں۔غازی ممتاز قادری کو انصاف اور آزادی دلانے کیلئے 22جون کو اسلام آباد میں قانون کے ہر دروزے پر دستک دیں گے۔ غازی ممتاز حسین قادری کروڑوں مسلمانوں کا تر جمان ہے۔ اس لیے ہم اس کا ساتھ نبھائیں اگر حکومت نے غازی ممتاز حسین قاری کو رہا نہ کیا تو آنے والے دنوں میں ہماری حتجاجی تحریک میں شدّت آ جائے گی اور یہ تحریک تحفظ ناموس رسالت کی راہ میں کھڑی ہر دیوار کو گرا دے گی۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -