عوامی رکشہ یونین کا لبرٹی چوک بند کر کے ایل ٹی سی کے خلاف مظاہزہ

عوامی رکشہ یونین کا لبرٹی چوک بند کر کے ایل ٹی سی کے خلاف مظاہزہ ...

  

                         لاہور( وقائع نگار)عوامی رکشہ یونین پاکستان نے چار گھنٹے تک لبرٹی چوک بند کرکے ایل ٹی سی کے خلاف احتجاجی مظاہرہ کیا۔مظاہرے میں اپوزیشن لیڈر پنجاب اسمبلی میاں محمودالرشید، پارلیمانی لیڈر جماعت اسلامی ڈاکٹر وسیم اختر،پی ٹی آئی کے رہنما میاں اکرم عثمان نے رکشہ ڈرائیوروں سے اظہار یکجہتی کیلئے شرکت کی اورہر سطح پر ان کے ساتھ ہونے والی زیادتیوں کے خلاف آواز اٹھانے کا اعلان کیا۔عوامی رکشہ یونین کے چیئرمین مجیدغوری نے کہا کہ ہمارا ایل ٹی سی کے ساتھ تحریری معاہدہ ہوگیا ہے۔ اس لئے ہم آج کا دھرنا ختم کرنے کا اعلان کرتے ہیں۔ایل ٹی سی نے کہا کہ چا لانوں کاقانون پنجاب اسمبلی سے پاس ہے۔ اس لئے 500کاچالان کرنا ہماری مجبوری ہے۔اگر پنجاب اسمبلی قانون ختم کر د ے تو ہم آپ کے چالان نہیں کریں گے۔مجید غوری نے کہا کہ چونکہ ایل ٹی سی صرف ایک کمپنی ہے جس کی ذمہ داری عوام کو سفری سہولیات مہیا کرنا ہے۔ان کورکشہ ڈرائیوروں کے چالانوں کا اختیار دینا سراسر نا انصافی اور زیادتی ہے۔اگر یہ قانون اسمبلی سے پاس ہے۔ تو ہم پنجاب اسمبلی کے 13جون کے ہونے والے اجلاس کے موقع پر فیصل چوک میںاپنے بیوی بچوں سمیت دھرنا دیں گے اور اپنے حقوق کی جنگ اسمبلی کے باہر ہم اور اسمبلی کے اندر پی ٹی آئی کے رہنما اور اپوزیشن لیڈر میاں محمود الرشید، اور جماعت اسلامی کے رہنما و پارلیمانی لیڈرڈاکٹر وسیم اخترتحریک التوا کار جمع کروا کر ہمارا ساتھ دیں گے اور اس قانون کی شدید مخالفت کریں گے اور اس کو ختم کروانے کیلئے بھر پور کوشش کریں گے۔مظاہرے کے موقع کئی رکشہ ڈرائیور بے ہوش ہوئے۔لیکن ان کے عزم کوئی کمی دیکھنے میں نہ ا ٓئی وہ ایل ٹی سی کے خلاف مسلسل نعرے بازی کرتے رہے مجید غوری نے اس موقع پر اعلان کیا ہے۔ کہ اگر پنجاب اسمبلی کے اس اجلاس میں یہ قانون ختم نہ کیا گیا توہر اجلا س کے موقع پر پنجاب اسمبلی کے باہر احتجاج کا سلسلہ شروع کر دیں گے ۔ عوامی رکشہ یونین مظبوط اور متحد ہے۔اور ہمارے حوصلے بلند ہیںاور رکشہ ڈرائیوروں کے ساتھ ہونے والی کسی بھی زیادتی کے خلاف ان کے ساتھ کھڑی ہے۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -