مذاکرات ختم ، اب آپریشن ہو گا ،تیاریاں مکمل ،قو می سلامتی کونسل کا اجلاس آج طلب

مذاکرات ختم ، اب آپریشن ہو گا ،تیاریاں مکمل ،قو می سلامتی کونسل کا اجلاس آج ...

  

                            اسلام آباد(خصوصی رپورٹ) وفاقی حکومت نے طالبان کے ساتھ جاری مذاکرات ختم کرنے کا فیصلہ کرلیاہے جس کی باقاعدہ منظوری قومی سلامتی کمیٹی کے اجلاس میں متوقع ہے جبکہ آپریشن کی تیاریاں مکمل کرلی گئی ہیں۔ انتہائی باخبر ذرائع نے بتایاکہ دہشتگردی کے حالیہ واقعات اور کالعدم تحریک طالبان کی طرف سے باقاعدہ ذمہ داری قبول کیے جانے کے بعدحکومت نے بات چیت کا سلسلہ ختم کرنے کافیصلہ کرلیاہے اور اِس بارے مےں رواں ہفتے قومی سلامتی کمیٹی کا اجلاس طلب کرلیاگیاہے جس کی صدارت وزیراعظم نوازشریف کریں گے۔ بتایاگیاہے کہ طالبان کی طرف سے عسکری اداروں اور اہم اثاثوں پر حملوں کے بعد مذاکرات کا آپشن ختم ہوگیاہے اورا ب آپشن بی پر عمل درآمد کیاجائے گاجس کا سرکاری طورپر قبائلیوں کوبھی عندیہ دیدیاگیاہے۔ذرائع نے انکشاف کیاہے کہ ممکنہ آپریشن کیلئے روس سے جدید گن شپ ہیلی کاپٹر منگوائے جارہے ہیں جن کا آرڈر دے دیاگیاہے اور وہ جلد پاکستان پہنچ جائیں گے۔بتایاگیاہے کہ مسلح افواج کو مستقبل قریب میں ملنے والے ایم آئی 35ہیلی کاپٹر کوبرا کی نسبت زےادہ موثر کارروائی کرسکتے ہیں اور کامیاب آپریشن کے بعد بحفاظت اپنے اڈے پر واپس آسکتے ہیں۔ذرائع نے بتایاکہ نیٹو اور ایساف فورسز کو آپریشن سے متعلق اعتماد میں لے لیاگیا ہے اور دہشتگردوں کی سرحد پار نقل و حرکت روکنے کے لیے نیٹو افواج سے بھی مدد لیے جانے کاامکان ہے۔ ذرائع کاکہناتھاکہ حالیہ واقعات کے بعد اس کے علاوہ کوئی چارہ نہیں کہ شمالی وزیرستان میں کالعدم تحریک طالبان کے ٹھکانوں کو ختم کردیاجائے عسکری ادارے بھی واضح کرچکے ہیں کہ اب مذاکرات کا راستہ چھوڑکرعملی اقدامات کریں۔ اجلاس میں ملک کی اندرونی سلامتی کی بگڑتی ہوئی صورتحال کا جائزہ لیاجائے گا اورآئندہ کا لائحہ عمل طے کیاجائے گا۔شمالی وزیرستان میں آپریشن کی تمام تیاریاں مکمل ہیں، مسلح افواج اپنی پوزیشنوں پر موجود ہیں جبکہ مقامی عمائدین کو تاحال باقاعدہ اعتماد میں نہیں لیاگیا تاہم آپریشن کا عندیہ دیدیاگیاہے ، وہاں سوات جیسی صورتحال ہے۔درےں اثناءوفاقی وزیر دفاع خواجہ محمد آصف نے کہا ہے کہ کراچی ائر پورٹ پر حملہ دہشت گردوں کی ناقابل معافی حرکت ہے۔ دہشت گردوں کو ایسا جواب دیا جائے گا کہ مستقبل میں کوئی ایسا کرنے کی جرات نہیں کرے گا۔ان کا کہنا تھا کہ کراچی ائر پورٹ پر دہشت گردوں کے حملے میں قومی اثاثوں اور اہم تنصیبات کو نشانہ بنایا گیا۔ انہوں نے کہا حملہ آوروں اور پناہ لینے والے دہشت گردوں کو ان کے ٹھکانوںپر شکست دی جائے گی۔ خواجہ آصف نے کہاکہ دہشت گردی کا یہ عمل ناقابل معافی ہے۔ ریاست اس کا بھرپور جواب دے گی، مستقبل میں اس طرح کی بزدلانہ کارروائی کی کوئی بھی جرات نہیں کر سکے گا۔

آپرےشن فےصلہ

مزید :

صفحہ اول -