ایئرپورٹ سیکیورٹی فورسزکے کیمپ پر حملہ ناکام ،فضائی آپریشن بحال

ایئرپورٹ سیکیورٹی فورسزکے کیمپ پر حملہ ناکام ،فضائی آپریشن بحال
ایئرپورٹ سیکیورٹی فورسزکے کیمپ پر حملہ ناکام ،فضائی آپریشن بحال

  

کراچی (مانیٹرنگ ڈیسک) جناح انٹرنیشنل ایئرپورٹ پر حملے کے بعد ایئرپورٹ سیکیورٹی فورسز (اے ایس ایف) کے کیمپ پر نامعلوم افرادکاحملہ ناکام بنادیاگیاہے اور رینجرز نے چار مشتبہ افراد کو حراست میں لے لیا، پاک آرمی نے ایئرپورٹ کاکنٹرول سنبھال لیا ہے اور تمام پروازیں معمول کے مطابق ہیں جبکہ تحریک طالبان مہمندایجنسی نے فائرنگ کی ذمہ داری قبول کرلی۔

اے ایس ایف ترجمان محمد عباس کے مطابق دودہشتگردوں نے ایئرپورٹ سیکیورٹی فورس کے کیمپ نمبر دو پرپہلوان گوٹھ کی طرف سے فائرنگ کی ،معاملہ ختم ہوگیا جس کے بعد فضائی آپریشن بحال کردیاگیااور تمام پروازیں معمول کے مطابق ہیں۔ے ایس ایف کے ڈائریکٹر انٹیلی جنس عباس میمن نے بتایاکہ حملہ آور پہلوان گوٹھ کی طرف فرار ہوگئے ہیں ، اے ایس ایف اہلکار ملزموں کا پیچھاکررہے ہیں تاہم میڈیا ذرائع کے مطابق حملہ آور نالے کے ذریعے گلستان جوہر کی طرف فرار ہونے میں کامیاب ہوگئے ۔ بتایاگیاہے کہ کچھ سیکیورٹی اہلکاروں نے حملہ آوروں کو نالے میں اُترتے دیکھاجس کے بعد رینجرز اور پولیس نے نالے کے اطراف بھٹائی آباد کی کچی آباد میں پوزیشنیں سنبھال کر ملزموں کی گرفتاری کیلئے سرچ آپریشن شروع کردیا جس دوران گھر گھر تلاشی لی گئی اور چار مشتبہ افراد کو حراست میں لے لیاگیا۔

                                                                       نجی ٹی وی چینل کے مطابق حملہ آوروں نے اے ایس ایف کے لیڈیز ہاسٹل میں داخلے کی کوشش کی لیکن بھرپورمزاحمت کا سامناہونے پر منہ کی کھانا پڑی اور جان بچاکر واپس بھاگ نکلنے میں کامیاب ہوگئے۔ڈی جی رینجرز نے بریفنگ دیتے ہوئے وزیراعظم نواز شریف کو بتایاکہ کیمپ پر فائرنگ ہوئی ہے لیکن اے ایس ایف اہلکاروں نے حملہ ناکام بنادیا اورحملہ آوروں کو منہ کی کھانا پڑی اور ہیلی کاپٹروں کے ذریعے فضائی نگرانی بھی کی جاتی رہی۔

ڈپٹی سیکریٹری داخلہ سندھ نے بتایاکہ حملہ آوروں نے کیمپ پر فائرنگ کی اور پھرقریبی آبادی میں واقع مسجد کی طرف بڑھ گئے ۔

ذرائع کے مطابق کیمپ پر حملے کے بعد ایک مرتبہ پھر فضائی آپریشن معطل کرنے کااعلان کردیاگیالیکن پاک فوج کے مسلح افواج نے رن وے اور ایئرپورٹ کی سیکیورٹی سنبھالنے کی پیشکش کردی جس پر سول ایوی ایشن اتھارٹی نے فضائی آپریشن بحال کرنے کااعلان کردیا۔ سی اے اے ترجمان کاکہناتھاکہ تمام پروازیں اپنے شیڈول کے مطابق ہیں ۔

پاک فوج کے محکمہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے مطابق مسلح افواج کے دستے اے ایس ایف کیمپ اور ایئرپورٹ پر پہنچ گئے، تین سے چار دہشتگردوں نے اے ایس ایف کیمپ پر حملہ کیاجس کے بعد فرا ر ہوگئے اور حملے کے بعد صورتحال قابومیں ہے ۔

دوسری طرف تحریک طالبان مہمند ایجنسی کے ترجمان عمر خالد خراسانی نے سماجی رابطوں کی ویب سائٹوں فیس بک اور ٹوئیٹر پر حملے کی ذمہ داری قبول کرلی ۔

 وزیراعلیٰ سندھ نے امن وامان کی صورتحال کا جائزہ لینے کے لیے طلب کیاگیااجلاس ملتوی کردیااور متعلقہ اداروں کو ہدایت کی ہے کہ وہ ہرممکن اقدامات کریں اور لمحہ بہ لمحہ صورتحال سے آگاہ کریں ۔وزیراعظم نواز شریف نے بھی حملے کا نوٹس لیتے ہوئے ایجنسیوں اور قانون نافذ کرنیوالے اداروں کو ایئرپورٹ اور کیمپ پر حملہ کرنیوالے ملزموں کا صفایاکرنے کا حکم دے دیا۔

مزید :

قومی -Headlines -