پاکستان میں بم پکڑنے والے آلات جعلی نکلے

پاکستان میں بم پکڑنے والے آلات جعلی نکلے
پاکستان میں بم پکڑنے والے آلات جعلی نکلے
کیپشن: Bomb

  

لندن (مانیٹرنگ ڈیسک) کراچی ایئرپورٹ جیسی حساس جگہ تک دہشت گردوں کے پہنچ جانے کی یقیناً کئی وجوہات ہوں گی لیکن ان میں سے ایک مبینہ طور پر سیکیورٹی اہلکاروں کے زیر استعمال جعلی بم ڈٹیکٹر آلات بھی ہوسکتے ہیں۔ کچھ دیگر پسماندہ ممالک کی طرح پاکستان میں بھی دھماکہ خیز مواد کا پتا چلانے کیلئے ADE651 نامی آلات استعمال کئے جارہے ہیں جس کے بارے میں انکشاف ہوا ہے کہ یہ مکمل طور پر فراڈ پر مبنی ایک جعلی آلہ ہے جو بم تو دور کی بات کسی بھی چیز کا پتا نہیں چلا سکتا۔ اس جعلی آلے کے موجد برطانوی باشندے میک کورمک کو جعلسازی کے جرم میں سزا بھی ہوچکی ہے اور اس آلے کے مکمل طور پر ناکارہ ہونے کی کئی عالمی ادارے تصدیق کرچکے ہیں اور سیکیورٹی مقاصد کے لئے اس کو استعمال نہ کرنے کی وارننگ دے چکے ہیں۔ لیکن افسوس کی بات ہے کہ آج بھی ہم حساس مقامات پر سیکیورٹی اہلکاروں کو یہ جعلی انٹینا نما آلہ اٹھائے دھماکہ خیز مواد کا پتا چلانے کی کوشش کرتے ہوئے دیکھ سکتے ہیں۔ 2010ءمیں ہماری ایئرپورٹ سیکیورٹی فورس نے میک کارمک کی جعلی ٹیکنالوجی کی بنیاد پر تیار کئے گئے ایک ملتے جلتے آلے کے استعمال کا اعتراف بھی کیا، حالانکہ اس وقت تک میک کارمک کا فراڈ ثابت ہوچکا تھا اور ساری دنیا کو اس کی سزا کے بارے میں پتا چل چکا تھا۔

مزید :

قومی -اہم خبریں -