سوشل میڈیا کا غلط استعمال!

سوشل میڈیا کا غلط استعمال!

  



جدید تر مواصلاتی نظام جہاں ایک نعمت ہے وہاں مسائل کا ذریعہ بھی بن گیا اور غلط قسم کے لوگ اس کا ناجائز استعمال کر رہے ہیں، دھوکے بازی ایک الگ مسئلہ ہے، لیکن فیس بُک کے ذریعے جو فحاشی پھیلائی جا رہی ہے وہ معاشرے کے لئے زہر قاتل بن رہی ہے۔ ہمارا مُلک پہلے ہی مسائل کا شکار ہے کہ اب یہ میڈیا بھی غلط لوگوں کے ہاتھوں نقصان کا باعث بن رہا ہے، افسوس کا مقام ہے کہ ایسے لوگوں کی تعداد بڑھتی جا رہی ہے۔بعض حضرات نے اپنے پروفائل مذہبی قسم کے بنا کر فرینڈ شپ کی درخواست کی اور منظور ہو جانے کے بعد بتدریج دوسرے ناموں سے ٹائم لائن بنا کر بے ہودہ اور شرمناک ویڈیو بھجوانے کا سلسلہ شروع کر رکھا ہے، اس سلسلے میں مغرب سے درآمدی ویڈیوز ستعمال کی جا رہی ہیں، ان حضرات کی اس حرکت کی وجہ سے ایسی بے ہودہ اور شرمناک ویڈیو گھروں کے اندر تک پہنچ جاتی ہیں،جن سے نابالغ بچے خراب ہوتے ہیں۔قومی اسمبلی اس سلسلے میں قانون سازی کر رہی تھی، جو اب تک بوجوہ مکمل نہیں ہو پا رہی۔ایف آئی اے میں ایک شعبہ سائبر کرائمز سے بھی متعلق ہے۔ حکومت کو چاہئے کہ اس شعبہ والوں کو یہ فرض بھی سونپ دے اور عوام سے اپیل کی جائے کہ جن کو ایسی ویڈیوز وصول ہوں وہ اس شعبہ کو بھیج دیں جو تحقیق کر کے ان لوگوں کو آسانی سے تلاش کر سکتا ہے، جو ایسے بے ہودہ کام میں ملوث ہیں، قومی اسمبلی کو بھی اپنا فرض پورا کرنا چاہئے اور جلد از جلد ایک مکمل اور جامع قانون منظور کرنا چاہئے کہ اس برائی کو روکا جا سکے۔

مزید : اداریہ


loading...