وفاقی بجٹ میں مختلف سیکٹرز کی سیلز پر الیکٹرونک مانیڑنگ متعارف

وفاقی بجٹ میں مختلف سیکٹرز کی سیلز پر الیکٹرونک مانیڑنگ متعارف

  



کراچی(اکنامک رپورٹر)وفاقی بجٹ2015-16 میں مختلف سیکٹرز کی سیلز پر الیکڑونک مانیڑنگ متعارف کروا دی ہے۔ٹیکس کی چوری روکنے کے لیے حکومت نے مخصوص سیکڑز کی سیلز پر الیکڑونک مانیڑنگ متعارف کروا دی ہے۔ سیلز ٹیکس کے اس نئے اقدام سے حکومت نے مخصوص سیکڑز جس میں سیگریٹ ، بیوریجز، سیمنٹ، فرٹلائیزرز اور چینی کو الیکڑونک مانیڑنگ کے لیے شامل کیا گیاہے جبکہ ہوٹلوں کی سیل کو بھی مانیڑ گیا جائے گا۔ایف بی آر ذرائع کے مطابق ان سیکڑز میں بڑے پیمانے میں ٹیکس چوری کی شکایت ہے جس میں عام طور پر سیلز ٹیکس چوری کرنے کے لیے یہ خام مال زیادہ تر غیر ریجسڑڈ سیکڑز سے خریدتے جس کی وجہ سے ان کی مصنوعات کی صحیح طور پر تخمینہ لگانا ممکن ہوتا۔ ذرائع کے مطابق صحیح تخمینہ نہ ہونے کی وجہ سے پچھلے چند سالوں کے دوران ان سیکڑز کی جانب سے اربوں روپے کا ٹیکس چوری ہونے کا پتہ چلاہے اور ان کے خلاف کاروائی بھی شروع کی گئی جس کے خاطر خواہ نتائج حاصل نہیں ہو سکے کیونکہ زیادہ تر کیسسز میں عدالتوں سے اسٹے حاصل کر لیا گیا ہے۔

مزید : کامرس


loading...