حکومت اور پرائیویٹ شرکت داری بہت اہمیت کی حامل ہے:خواجہ ضرارکلیم

حکومت اور پرائیویٹ شرکت داری بہت اہمیت کی حامل ہے:خواجہ ضرارکلیم

  



لاہور(پ ر) فیڈریشن آف پاکستان چیمبرز آف کامرس اینڈ انڈسٹری(ایف پی سی سی آئی) کے ریجنل آفس میں ریجنل چےئرمین خواجہ ضرار کلیم کی زیر صدارت ’’ پاپولیشن اینڈ ڈویلپمنٹ فوکسنگ اون یوتھ‘‘ کے موضوع پر ایف پی سی سی آئی اور منسٹری آف نیشنل ہیلتھ سروسز آف پاکستان کے باہمی اشتراک سے خصوصی سیمینار منعقد کیا گیا۔جس میں پاکستان بھر سے سماجی کارکن،تاجر رہنما اور مقامی این جی او کے نمائندوں نے بڑی تعداد میں شرکت کی۔اس موقع پرریجنل چےئرمین خواجہ ضرار کلیم نے کہا کہ آبادی میں اضافہ کے اہم مسئلہ پر حکومت اور پرائیویٹ شرکت داری بہت اہمیت کی حامل ہے۔حکومت اس وقت تک کسی بھی مسئلے کا مکمل حل نہیں نکال سکتی جب تک عام لوگ اس میں اپنی دلچسپی ظاہر نہ کریں۔پاکستان آبادی کے لحاظ سے اس وقت دنیا کا چھٹابڑا ملک بن چکا ہے جو وسائل کی عدم موجودگی میں کسی صورت بھی ہمارے لئے مثبت پیغام نہیں ہے۔ڈائریکٹر جنرل پاپولیشن پروگرامنگ منسٹری آف نیشنل ہیلتھ سروسز ڈاکٹر عبدالغفارنے کہا کہ 1950میں پاکستان آبادی کے لحاظ سے دنیا میں 14نمبر پر تھا اور 2014میں چھٹے نمبر پر ہے جو ایک بہت بڑا لمحہ فکریہ ہے۔آبادی کے اضافے سے پاکستان معاشی بد حالی کا شکار ہے ہم آبادی کوکم کر اپنی معاشی صورتحال کو بہتر کرسکتیں ہیں۔

آبادی میں اضافے کی وجہ سے ملک کو پانی ،بجلی،گیس اور قدرتی وسائل میں کمی جیسے خطرات لاحق ہیں۔ ڈائریکٹر جنرل منسٹری آف نیشنل ہیلتھ سروسز ڈاکٹر شفقت شیخ نے حکومت کی طرف سے جاری نئے منصوبے بارے بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ پاکستان کی35فیصد آبادی نوجوانوں پر مبنی ہے اور نوجوانوں کی زیادہ آبادی کے لحاظ سے پاکستان دونوں کا دوسرا بڑا ملک ہے، ہم پاکستان کے نوجوانوں کو آبادی میں اضافے کے نقصان اور فیملی پلاننگ سے متعلق آگاہی دے کر آبادی میں اضافے کو روک سکتیں ہیں۔ منسٹری آف نیشنل ہیلتھ سروسز ڈائریکٹر ایڈمن اینڈ کوارڈینشن ڈاکٹراحسان الحق نے اپنی خطاب میں کہا کہ پاکستان میں ایک منٹ میں 9بچے پیدا ہوتے ہیں اور تین اموات ہوتی نیٹ ایڈیشن 6ہے جو ایک ترقی پزیر ملک کیلئے انتہائی افسوسناک ہے۔یوایم ٹی کے پروفیسر راحت العین نے کہا کہ فیملی پلاننگ سے متعلق آگاہی کے پروگرام کو اور زیادہ بہتر بنانے کی ضرورت ہے جب تک ریسرچ کرکے لوگوں کو آبادی کے نقصان بارے آگاہی نہیں دی جائے گی تب تک اس مسئلے کو حل نہیں کیا جا سکیں گا۔ایف پی سی سی آئی کی قائمہ کمیٹی برائے ایس ایم از کی چےئرمین رحمت اللہ جاوید نے کہا پاپولیشن پلاننگ فوکسنگ یوتھ ایک انتہائی ایک موضوع ہے اس پر عمل کرکے ہم پاکستان کو ہیلتھی اور گرین ملک بنا سکتے ہیں۔

مزید : کامرس