عالمی برادری مشرقی پاکستان میں بھارتی مداخلت کے اعتراف کا نوٹس لے ‘ دفتر خارجہ

عالمی برادری مشرقی پاکستان میں بھارتی مداخلت کے اعتراف کا نوٹس لے ‘ دفتر ...

  



 اسلام آباد(اے این این) پاکستان نے بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی کے بنگلہ دیش میں دئیے گئے بیان کو منفی رویے کا عکا س قرار دیتے ہوئے کہا کہ عالمی برادری مشرقی پاکستان میں بھارتی مداخلت کے اعتراف کا نوٹس لے، سانحہ 71میں اقوام متحدہ کے چارٹر کی خلاف ورزی کی گئی،بھارتی حکمران دوسری ریاستوں کے داخلی معاملات میں مداخلت قابل فخر سمجھتے ہیں، مودی نے بیان دے کر پاکستان اور بنگلہ دیش کے تعلقات خراب کرنے کی ناکام کوشش کی ہے۔ترجمان دفتر خارجہ قاضی خلیل اللہ نے بنگلہ دیش میں بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی کے اس بیان پر شدید رد عمل کا اظہار کیا ہے جس میں مودی نے سقوط ڈھاکہ میں بھارت کی مداخلت کا اعتراف کیا تھا اور کہا تھا کہ بنگلہ دیش کے قیام میں بھارتی فوجیوں کا خون بھی شامل ہے۔ترجمان نے کہا کہ بھارتی وزیراعظم کا بیان بھارتی منفی رویئے کا عکاس ہے اس لئے عالمی برادری مشرقی پاکستان میں بھارتی مداخلت کے اعتراف کا نوٹس لے۔انھوں نے کہا کہ بھارتی حکمران نہ صرف سانحہ 71 میں ملوث تھے بلکہ انہوں نے اقوام متحدہ کے چارٹرکی بھی خلاف ورزی کی اور بھارتی حکمران دوسری ریاستوں کے داخلی معاملات میں مداخلت قابل فخر سمجھتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان پرامن انداز میں بھارت کے ساتھ اچھے تعلقات کا خواہاں ہے لیکن بھارتی وزیراعظم نریندرمودی کی جانب سے دوطرفہ تعلقات کو پریشانی قراردینا بدقسمتی ہے، انگریزوں سے آزادی حاصل کرنے کے لئے دونوں ممالک نے مشترکہ جدوجہد کی تھی۔انھوں نے کہا کہ نریندر مودی نے بنگلادیش میں بیان دے کر پاک بنگلا تعلقات خراب کرنے کی کوشش کی ہے اور یہ کوشش ناکام رہے گی کیوں کہ پاکستان اور بنگلادیش کے عوام مذہبی رشتوں میں جڑے ہوئے ہیں اور دونوں ممالک کے درمیان دوستانہ تعلقات ہیں جنہیں خراب کرنے کیلئے بھارتی عزائم کامیاب نہیں ہوں گے۔

مزید : صفحہ اول


loading...