شاہ محمود قریشی اور رانا تنویر کے درمیان تلخ جملوں کا تبادلہ ، ایوان کی کارروائی معطل ، سپیکر نے بیچ بچاﺅ کرادیا

شاہ محمود قریشی اور رانا تنویر کے درمیان تلخ جملوں کا تبادلہ ، ایوان کی ...
شاہ محمود قریشی اور رانا تنویر کے درمیان تلخ جملوں کا تبادلہ ، ایوان کی کارروائی معطل ، سپیکر نے بیچ بچاﺅ کرادیا

  



اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) قومی اسمبلی کے اجلاس کے دوران تحریک انصاف کے رہنماءشاہ محمود قریشی اور حکومتی وزیررانا تنویز کے درمیان تلخ جملوں کا تبادلہ ہواہے اور شاہ محمود قریشی نے رانا تنویز کی طرف بڑھنے کی کوشش کی جس پر سپیکر نے دونوں کے درمیان بیچ بچاﺅ کرایا اور شاہ محمود قریشی کو مخاطب کرتے ہوئے کہاکہ آپ غلط کررہے ہیں ، میں آپ سے یہ توقع نہیں کرتاتھا جس کے بعد رانا تنویر نے شاہ محمود قریشی سے معذرت کرلی ۔

سپیکر قومی اسمبلی سردار ایاز صادق کی زیرصدارت ہونیوالے اجلاس کے دوران حسب روایت حکومتی وزیر نے تنقید شروع کردی جس پر شاہ محمود قریشی نے کہاکہ ایوان کا ماحول خراب کرنے میں دیر نہیں لگتی ، لائیوکوریج نہیں ہورہی لہٰذا وزراءبھی پارلیمنٹ میں گولہ باری نہ کریں ، یہاں جملے بازی ہوگی تو کارروائی نہیں چلے گی ، حکومت کو احساس ہوناچاہیے کہ اپنی زبان کا استعمال ذرا بہتر کریں جس پر رانا تنویر برہم ہوگئے اور شاہ محمود قریشی سے کہاکہ زیادہ باتیں نہ کریں ، میں تمہارے باپ داد ا کو جانتاہوں ، یہی بات کرناتھی کہ شاہ محمود قریشی اپنی نشست سے اٹھ گئے اور کہاکہ یہاں یہ بدمعاشی کرنے آتے ہیں اور رانا تنویر کی طرف بڑھنے کی کوشش کی لیکن سپیکر نے مداخلت کرتے ہوئے شاہ محمود قریشی کوروک لیا اور کہاکہ آپ سینئر سیاستدان ہیں ، آپ کی عزت ہے ، آپ سے ایسی توقع نہیں کی جاسکتی ۔

صورتحال کی سنگینی کا اندازہ ہونے پر رانا تنویز کے لہجے میں بھی تبدیلی آئی اور کہاکہ اگر دل آزاری ہوئی تو وہ معافی مانگتے ہیں ۔ اس ناخوشگوار صورتحال کی وجہ سے قومی اسمبلی میں پندرہ منٹ کے لیے بجٹ بحث معطل رہی لیکن بعد سپیکر کی طرف سے معاملہ رفع دفع کرائے جانے پر بحث دوبارہ شروع ہوگئی ۔

مزید : اسلام آباد /اہم خبریں


loading...