سانحہ بلدیہ ٹاﺅن ، مقتول ڈی ایس پی پر حملے کے عینی شاہدین سامنے آگئے

سانحہ بلدیہ ٹاﺅن ، مقتول ڈی ایس پی پر حملے کے عینی شاہدین سامنے آگئے
سانحہ بلدیہ ٹاﺅن ، مقتول ڈی ایس پی پر حملے کے عینی شاہدین سامنے آگئے

  



کراچی (مانیٹرنگ ڈیسک) سانحہ بلدیہ ٹاﺅن کی تحقیقاتی ٹیم میں شامل مقتول ڈی ایس پی مجید عباس پر حملے کے عینی شاہدین بھی سامنے آگئے ہیں تاہم سیکیورٹی خدشات کی وجہ سے اُن کی شناخت ظاہر نہیں کی گئی ۔

پولیس کے مطابق عینی شاہدین کی مدد سے حملے میں ملوث ملزموں کے خاکے تیار کیے جائیں گے ، عینی شاہدین نے تین ملزموں کے چہرے دیکھے جبکہ ایک نے ہیلمنٹ پہن رکھاتھا، چار حملہ آور دو موٹرسائیکلوں پر آئے جو ایک گھنٹے تک جائے واردات پر ڈی ایس پی مجیدعباس کا انتظار کرتے رہے ، چاروں کی عمریں 25سے 30سال کے درمیان تھیں اور جاتے ہوئے خول بھی اٹھاکر لے گئے ۔

پولیس کاکہناتھاکہ مجیدعباس سانحہ بلدیہ ٹاﺅن کی تحقیقاتی ٹیم کے ممبر تھے اور عینی شاہدین سے پوچھ گچھ اور اُنہیں کمیٹی کے روبرو پیش کیاکرتے تھے ۔

مزید : کراچی