دھاندلی کمیشن ، پی ٹی آئی رہنماﺅں سمیت ایم این ایز کے 98فیصد پولنگ سٹیشنوں سے فارم 15غائب ہونے کا انکشاف

دھاندلی کمیشن ، پی ٹی آئی رہنماﺅں سمیت ایم این ایز کے 98فیصد پولنگ سٹیشنوں سے ...
دھاندلی کمیشن ، پی ٹی آئی رہنماﺅں سمیت ایم این ایز کے 98فیصد پولنگ سٹیشنوں سے فارم 15غائب ہونے کا انکشاف

  



اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) عام انتخابات کے دوران بیشتر حلقوں میں فارم کے موجودنہ ہونے کا انکشاف ہواہے جس میں پاکستان تحریک انصاف کے امیدواروں کے حلقے بھی شامل ہیں جس کی تصدیق عمران خان نے بھی کردی ہے جبکہ حکومتی رہنماءمحمد زبیرکاکہناتھاکہ فارم 15کی عدم موجودگی کا مطلب دھاندلی نہیں ہوتا، بیشترامیدواروں کے حلقے میں فارم غائب تھے جبکہ اطلاعات یہ بھی ہیں کہ نادرا کو 60حلقوں کا الیکٹورل ریکارڈ ہی نہیں ملا۔

کمیشن کے اجلاس کے دوران کی اندرونی کہانی عمران خان کی زبانی ، تفصیلات کیلئے یہاں کلک کریں ۔

عام انتخابات میں ہونیوالی مبینہ دھاندلیوں کی تحقیقات کیلئے تشکیل دیے گئے کمیشن کی کارروائی کے دوران انکشاف ہواہے کہ ایم این ایز کے 98فیصدحلقوں میں فارم 15نہیں تھے ، این 10میں 253میں سے 251کے فارم 15غائب ہیں ، اسی طرح این اے 11میں 251میں سے 247پولنگ سٹیشن، این اے 16کے 159میں سے 60پولنگ سٹیشن ، این اے 25کے 308میں سے 216پولنگ سٹیشنوں کے فارم 15غائب ہیں ۔ این اے 27کے 254میں سے 59پولنگ سٹیشنز کے ریکارڈ میں سے بھی فارم 15نہیں ملا ۔

شاہ محمد قریشی کے حلقے سے چھیالیس فیصد پولنگ سٹیشنوں جبکہ سلیم رحمان اور مرداسعید کے حلقے میں 55فیصد پولنگ سٹیشنوں سے فارم 15نہیں ملے ۔

جوڈیشل کمیشن کے سربراہ اور چیف جسٹس ناصرالملک نے کہاکہ فارم 15سے متعلق جورپورٹس آئی ہیں ، فریقین ان کا جائزہ لیں ، بیشترمعلومات آچکی ہیں اور مزید معلومات کمیشن کے حکم پر متعلقہ مال خانوں سے آرہی ہیں ، ریکارڈ کا جائزہ لینے کے بعد مزید گواہان کی طلبی کا فیصلہ کریں گے اور سماعت پیرتک ملتوی کردی ۔

حکومتی رکن محمد زبیرنے میڈیا سے گفتگوکرتے ہوئے کہاکہ بیشتر حلقوں سے فارم 15نہیں ملے لیکن اس کا مطلب دھاندلی بھی نہیں ۔طلال چوہدری کا کہناتھاکہ آراوز کی گواہی نے ثابت کیا کہ الزامات محض فرضی کہانیاں ہیں ، الزماات لگانیوالوں نے ان سے ایک سوال بھی نہیں پوچھاگیا۔

مزید : اسلام آباد /اہم خبریں


loading...