ملائشین گمشدہ طیارہ،بڑے بڑے ماہرین ناکام ہو گئے ،ریاضی کے ایک پروفیسر نے معمہ حل کردیا

ملائشین گمشدہ طیارہ،بڑے بڑے ماہرین ناکام ہو گئے ،ریاضی کے ایک پروفیسر نے ...
ملائشین گمشدہ طیارہ،بڑے بڑے ماہرین ناکام ہو گئے ،ریاضی کے ایک پروفیسر نے معمہ حل کردیا

  



نیو یارک (نیوز ڈیسک) گزشتہ سال لاپتہ ہونے والی ملائشیا ائر لائن کی پرواز MH 370 کا تا حال کوئی سراغ نہیں مل سکا۔ اگرچہ اس کے بارے میں اب تک درجنوں نظریات پیش کئے جا چکے ہیں لیکن ریاضی کے ایک پروفیسر نے اس پرواز کی گمشدگی کے بارے میں اب تک کا مؤثر ترین نظریہ پیش کر دیا ہے۔

امریکا کی ٹیکساس اے اینڈ ایم یونیورسٹی کے پروفیسر ڈاکٹر گونگ شین کا کہنا ہے کہ ان کے تیار کردہ ریاضیاتی کمپیوٹر ماڈل ظاہر کرتے ہیں کہ پرواز MH 370 بحر ہند کے اوپر پرواز کے دوران عمودی زاویے پر سمندر میں داخل ہوئی اور طیارہ کسی بڑی ٹوٹ پھوٹ کا شکار ہوئے بغیر سمندر میں غرق ہو گیا۔ ان کا کہنا ہے کہ یہی وجہ ہے کہ اس کا ملبہ ملا ہے اور نہ ہی سطح سمندر پر تیل کے نشانات ملے ہیں۔ پروفیسر گونگ کی تحقیق سے دیگر کئی اہم باتیں بھی معلوم ہوئی ہیں جو کہ طیارے کی تلاش کے لئے انتہائی اہم ثابت ہو سکتی ہیں۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ نئی تحقیق سامنے آنے کے بعد امید پیدا ہو گئی ہے کہ ایک سال سے زائد عرصہ سے لاپتہ بدقسمت طیارے کا بالاخر کوئی سراغ مل جائے گا۔

مزید : ڈیلی بائیٹس


loading...