دوطرفہ تجارتی حجم کے لحاظ سے چین پاکستان کا دوسرا بڑا شراکت دار بن گیا

دوطرفہ تجارتی حجم کے لحاظ سے چین پاکستان کا دوسرا بڑا شراکت دار بن گیا

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

اسلام آباد(آن لائن) پاک چین دو طرفہ تجارت کے سالانہ حجم کے لحاظ سے چین پاکستان کا دوسرا بڑا شراکت دار بن چکا ہے۔ پاکستان کی خطے میں پوزیشن، قدرتی وسائل کی فراوانی اور گرم پانی کی بندرگاہوں کے باعث چین کے لئے انتہائی اہمیت کا حامل ہے جبکہ پاکستان کی جغرافیائی حیثیت اس کو نہ صرف جنوبی ایشیاء4 کے ممالک کے اقتصادی رابطوں کے حوالے سے بھی پاکستان کی اہمیت میں اضافہ ہوا ہے۔دونوں ممالک کے باہمی اقتصادی تعلقات میں مزید اضافہ ہوتا ہے۔ وزارت تجارت کے زرائع کے مطابق پاکستان کی جغرافیائی حیثیت اور پاک چین دوطرفہ تعاون میں اضافہ اور جنوبی ایشیاء4 کو مشرق وسطیٰ سے منسلک کرنے کے حوالے سے چین اقتصادی راہداری کے حوالے سے پاکستان میں 46ارب ڈالر سے زائد کی سرمایہ کاری کر رہا ہے۔ چین پاکستان اقتصادی راہداری منصوبہ (سی پیک) کے تحت چین پاکستان میں بندرگاہوں، جہازرانی، بنیادی ڈھانچے، مواصلات اور توانائی سمیت دیگر مختلف شعبوں میں سرمایہ کاری کر رہا ہے جس سے پاک چین دوطرفہ تعاون اور پاکستان کی معاشی ترقی کے فروغ میں مدد حاصل ہو گی۔پاک چین اقتصادی راہداری منصوبہ (سی پیک) دوطرفہ تعلقات کی روشن مثال ہے جو دنیا بھر کے ماہرین اقتصادیات کی نظر میں گیم چینجر ثابت ہو گا۔ پاکستان کو سی پیک سے بھرپور استفادہ کرنا چاہیے جس سے نہ صرف ملک کی صنعتی ترقی، صرف چین کی ضرورت نہیں بلکہ پاکستان کے خوابوں کی تعبیر بھی ثابت ہو گا۔

مزید :

کامرس -