واسا کے 160ٹیو ب ویل نا کارہ ، سحر و افطارکے وقت پانی کی بدترین قلت

واسا کے 160ٹیو ب ویل نا کارہ ، سحر و افطارکے وقت پانی کی بدترین قلت

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

 لاہور(لیاقت کھرل) شہر میں واسا کی جانب سے نصب 516ٹیوب ویلوں میں سے 160ٹیوب ویل ناکارہ اور بوسیدہ جو کہ اپنی عمر پوری کر پانے کے باعث چار کیوسک کی جگہ ڈیڑھ کیوسک یا پھر دو کیوسک پانی دینے لگے ہیں، ان میں سے بعض ایسے ٹیوب ویل بھی بتائے گئے ہیں جو کہ پانی کی جگہ پر ریت اور ہوا دے رہے ہیں یہ ٹیوب ویل شہریوں کی آب نوشی کی ضروریات پوری کرنے میں ناکام ہیں ’’پاکستان‘‘ کو محکمہ واسا کی جانب سے ٹیوب ویلوں اور صارفین کی تعداد اور ناکارہ ٹیوب ویلوں کی تبدیلی و مرمت کے حوالے سے ملنے والی تفصیلات کے مطابق لاہور میں واسا نے شہریوں کو پینے کے صاف پانی کی فراہمی کے لئے 516 سے زائد ٹیوب ویل نصب کر رکھے ہیں جو کہ کینٹ کے علاقہ کے علاوہ لاہوریوں کو پینے کا صاف پانی فراہمی کا کام کر رہے ہیں اس میں 6لاکھ 80ہزار سے زائد واسا صارفین کی تعداد بتائی گئی ہے۔ واسا کے ان ٹیوب ویلوں میں 160سے زائد ٹیوب ویل ایسے بتائے گئے ہیں، جو کہ چار کیوسک پانی کا ڈسچارج کرتے تھے اور ان ٹیوب ویلوں کی ٹھیک طرح سے مرمت اور دیکھ بھال نہ ہونے پر ناکارہ ہو چکے ہیں اور چار کیوسک کی جگہ دو کیوسک اور ڈیڑھ کیوسک تک پانی ڈسچارج کر رہے ہیں ، ان ٹیوب ویلوں کے بارے واسا کے انجینئروں کا کہنا ہے کہ یہ ٹیوب ویل ناکارہ ہو چکے ہیں اور واسا کو ریونیو کی بجائے الٹا بجلی کا زائد خرچ کرنے کے باعث بوجھ بن کر رہ گئے ہیں، ذرائع نے بتایا ہے کہ ان ٹیوب ویلوں کی تبدیلی اور مرمت کے لئے واسا کے جاپان کے ادارہ جائیکا کے ساتھ دو سال قبل باقاعدہ معاہدہ بھی طے پایا لیکن تاحال اس معاہدے کے تحت شہر کے ناکارہ اور بوسیدہ ٹیوب ویلوں کو مکمل طور پر تبدیل نہیں کیا جا سکا۔ واسا حکام کا کہنا ہے کہ جاپان کے ادارہ جائیکا سے معاہدہ طے پا گیا ہے اور اگلے ماہ جولائی سے 105ٹیوب ویلوں کی تبدیلی کا سلسلہ شروع کر دیا جائے گا، جبکہ 45ٹیوب ویل کی تبدیلی کیلئے پنجاب حکومت نے فنڈز فراہم کر دیئے ہیں۔

لاہور ( خبر نگار) شہر کے اکثر علاقوں میں پینے کے صاف پانی کی شدید قلت ،شہری سحری اور افطاری کے اوقات میں شدید پریشانی سے دوچار تفصیلات کے مطابق ٹاؤن شپ کے علاقے مادر ملت روڈ جو کہ پنجاب حکومت کے ترجمان اور رکن صوبائی اسمبلی سید زعیم قادری کا حلقہ انتخاب بتایا جاتا ہے وہاں ٹیوب ویل آئے روز خراب رہتا ہے اور علاقہ کے مکین پانی کی بوند بوندکو ترس کر رہ گئے ہیں۔ واسا کے متعلقہ حکام کا کہنا ہے کہ ان کے پاس فنڈز کی شدید کمی ہے اس میں حلقہ کے ایم پی اے کو اپنا کردار ادا کرنا چاہیے۔ دوسری جانب مادر ملت روڈ ٹاؤن شپ، گلشن بلاک اقبال ٹاؤن ، تاج پورہ اورغازی آباد کے مکینوں نے گزشتہ روز پانی کی قلت کے خلاف احتجاجی مظاہرے کئے۔ شہریوں کا کہنا تھا کہ سحری کے دو گھنٹے بعد پانی چلا جاتا ہے اور افطاری کے اوقات میں بھی پانی نہیں آتا اور رات 11 بجے کے بعد موٹریں پانی کو کھینچنے میں کامیاب ہوتی ہیں۔ دوسری جانب ’’پاکستان‘‘ کے سروے میں مغلپورہ رشید پورہ ،اور ہربنس پورہ سمیت مدینہ کالونی شالامار،القادر سکیم سمیت باغبانپورہ کی آبادیوں میں شہری پانی کی بوند بوند کو ترس گئے ہیں۔ اس میں مادرملت روڈ ٹاؤن شپ کے مکینوں کا کہناہے کہ گرمی کا موسم شروع ہوتے ہی پانی کی بوند بوند کو ترس گئے ہیں اور ایسے لگ رہاہے کہ جیسے واپڈاکی طرح واسا نے بھی پانی کی سپلائی میں ایک قسم کی قلت پید ا کررکھی ہے اسی طرح تاج پورہ ،غازی آباد ،مغلپورہ ،باغبانپورہ ، سمیت رشید پورہ ،کوٹلی پیر عبدالرحمٰن سمیت اردگر د آبادیوں کا سروے کرنے پر معلوم ہوا کہ سحری کے ایک سے دو گھنٹے بعد پانی کی سپلائی بند ہوجاتی ہے اور موٹرروں کے ذریعے بھی سپلائی لائنوں میں پانی نہیں آتا اور دن بھرنلکے خشک رہتے ہیں مادر ملت روڈ ٹاؤن شپ اور غازی آباد کے مکینوں کا کہناہے کہ پانی کی قلت کے خلاف متعدد بار واسا حکام کو درخواستیں بھی دے چکے ہیں۔