ایم ڈبلیو ایم آج ملک بھر میں یوم احتجاج منائیگی،علامہ حسن ظفرنقوی

ایم ڈبلیو ایم آج ملک بھر میں یوم احتجاج منائیگی،علامہ حسن ظفرنقوی

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


اسلام آباد( سٹاف رپورٹر)مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی رہنما علامہ حسن ظفر نقوی نے احتجاجی کیمپ میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ 10 جون بعد از نماز جمعہ ملک بھر میں یوم احتجاج منایا جائے گا۔ ہماری جماعت کے سربراہ علامہ راجہ ناصر عباس جعفری کی بھوک ہڑتال کا آج 29واں روز ہے۔ملک میں جاری شیعہ ٹارگٹ کلنگز ، ریاستی جبر اور دہشت گردی کے خلاف ایم ڈبلیو ایم اپنے اصولی موقف پر ڈٹی ہوئی ہے۔رمضان المبارک اور گرمی کی شدت کے باوجودشیعہ سنی عمائدین کی بڑی تعداد روزانہ احتجاجی کیمپ کا دورہ کرکے سربراہ مجلس وحدت مسلمین سے یکجہتی کا اظہار کررہی ہیں۔ہماری جماعت کے مطالبات کے حق میں ہمیں ملک کی بیشتر چھوٹی بڑی سیاسی و مذہبی جماعتوں کی تائید حاصل ہو چکی ہے۔حکومتی کی مسلسل بے حسی کے باعث شیعہ قوم کے تحفظات اپنی جگہ پر قائم و دائم ہیں۔ نیشنل ایکشن پلان پر اس کی روح کے مطابق عمل نہیں کیا جا رہا۔ اس قانون کے بیشتر نکات عملاََ معطل کیے جا چکے ہیں۔ یہی وجہ ہے کہ دہشت گرد عناصر ڈنکے کی چوٹ پر اپنی کاروائیاں جاری رکھے ہوئے ہیں جبکہ نیشنل ایکشن پلان کی آڑ میں بے گناہ لوگوں کو انتقام کا نشانہ بنایا جا رہا ہے۔اس ظلم و بربریت کے خلاف ہم نے جمعہ کے روز ’’یوم احتجاج‘‘منانے کا متفقہ طور پر فیصلہ کیا ہے۔ قوم سے اپیل کی ہے کہ وہ نماز جمعہ کے بعد اپنے اپنے علاقوں میں پْر امن احتجاجی ریلیوں اور جلسوں کا انعقاد کریں اور حکومتی مظالم سے قوم کو آگاہ کریں۔انہوں نے کہا کہ ہماری کوشش تھی کہ قوم کو کسی آزمائش میں ڈالے بغیراپنے مطالبات تسلیم کرائیں جائے لیکن حکومت کا رویہ اس احساس کو تقویت دے رہا ہے کہ جب تک قوم کو سڑکوں پر نہ لایا تب تک نتیجے کا حصول ممکن نہیں۔حکومت کے خلاف لانگ مارچ کی بھرپور تیاری کی جارہی ہے۔اس سلسلے میں آل پارٹیز کانفرنس کے دوران 24 شیعہ جماعتوں نے مکمل اعتماد کا اظہار کرتے ہوئے فیصلے کا حق علامہ راجہ ناصر عباس جعفری کو دے رکھا ہے۔ملک میں قیام امن یقینی بنانے کے لیے ملک دشمن طاقتوں کی بیخ کنی انتہائی ضروری ہے۔پاکستان کے اسی ہزار بے گناہ افراد کو شہید کرنے والے مذموم عناصر کو جب تک سولی پر نہیں لٹکایا جاتا تب تک انصاف کے تقاضے پورے نہیں ہوں گے۔ ہم پاکستان کے شہدا کی جنگ لڑ رہے ہیں۔ہمارا لڑائی پاکستان کی سالمیت و بقا کے دشمنوں سے ہے۔کچھ نادیدہ طاقتیں ان ملک دشمن قوتوں کو ایک بار پھر فعال کرنے کے لیے سرگرم ہیں۔اس ملک کو دہشت گردوں کی آماجگاہ نہ بننے دیا جائے۔قائد و اقبال نے جس پاکستان کا خواب دیکھا تھا وہ توایسی سرزمین تھی جہاں اسلامی قدروں کی پاسداری ہو۔جہاں تمام مذاہب کا احترام کیا جائے۔جہاں ہماری قوم اپنے پورے وقار کے ساتھ باعزت زندگی گزار سکے۔ لیکن نالائق حکمرانوں نے اس ملک کو مسلکی پاکستان بنا کر رکھ دیا ہے جہاں ظلم و بربریت کا راج ہے۔جہاں دہشت گرد دندناتے پھرتے ہیں اور شریف آدمی کو امن سے جینے نہیں دیا جاتا۔ ہم نے اس ظلم کے خلاف آواز حق بلند کی ہے۔اس ملک میں بسنے والے ہر باشعور سے ہماری یہ اپیل ہے کہ وہ مادر وطن کے دشمنوں کے خلاف اپنی آواز بلند کرے۔ہفتہ اور اتوار ہم یوم مناجات اور یوم دعا کے طور پر منائیں گے۔ایم ڈبلیو ایم کے تمام صوبائی و ضلعی دفاتر میں وطن کی سلامتی و استحکام کے لیے نوافل ادا کیے جائیں گے۔وطن عزیز کے تمام باسیوں سے درخواست ہے کہ وہ اپنے اپنے گھروں میں بھی وطن عزیز کی تعمیر وترقی کے لیے دعائیہ تقریبات کا اہتمام کریں۔انہوں نے کہا تحریک انصاف کے سربراہ نے ہمارے کیمپ میں آکر جو وعدے کیے ان پر عمل درآمد شروع ہو چکا ہے جو لائق تحسین ہے۔پریس کانفرنس میں سید اسد نقوی، علامہ عبد الخالق اسدی، علامہ نقی نقوی آف کراچی اور آصف رضا کے علاوہ دیگر رہنما و کارکنان موجود رتھے