بھارت سے مضر صحت کلیجی اوجھڑی سمگل ہونے لگی

بھارت سے مضر صحت کلیجی اوجھڑی سمگل ہونے لگی
بھارت سے مضر صحت کلیجی اوجھڑی سمگل ہونے لگی

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

راولپنڈی (ویب ڈیسک) راولپنڈی اسلام آباد میں مضر صحت اور غیر معیاری کلیجی ، اوجھڑی کی بھارت سے بڑے پیمانے پر سمگلنگ کا انکشاف ہوا ہے جو سوات ، مینگورہ، راولپنڈی ، اسلام آباد اور لاہور سمیت کئی شہروں میں منوں کے حساب سے فروخت ہورہی ہے،یہ سمگلنگ افغانستان کے راستے ہوتی ہے۔


روزنامہ امت کے مطابق بھارت سے اوجھڑی اور کلیجی کا غیر قانونی طورپر آنا کوئی نئی بات نہیں ہے ، اس سے قبل بھی اسی سال جنوی کے آخر اور فروری کے اوائل میں بھی ایک بڑی مقدار میں سپلائی کی گئی تھی۔ انڈیا سے آنے والی کلیجی کی پہچان یہ ہے کہ اس پر ہلکی نیلی اور سفید دھاریاں ہوتی ہیں، کیونکہ یہ کلیجی زیادہ دنوں کی ہوتی ہے اور زیادہ وقت فریز اور برف میں لگائے جانے کے باعث اس کا قدرتی رنگ تبدیل ہو جاتا ہے اور اس کے کھانے سے گردے ، مثانے اور جگر کے عارضے لاحق ہو سکتے ہیں۔ اسلم نامی قصاب نے بتایا کہ یہ اوجھڑی اور کلیجی پشاور کے مشہور قصاب دلاور خان کے علاقے سے لائی جاتی ہے۔ دلاور خان یہ کلیجی افغانستان کے راستے سے پاکستان منگواتا ہے۔ اس دوران وہ بڑی مقدار میں کلیجی اور اوجھڑی افغانستان بھی فروخت کرتا ہے۔ یہ مال بردار ٹرکوں میں دیگر اشیا کے درمیان رکھ کر لایا جاتا ہے۔ سکیورٹی چیکنگ کے دوران کچھ دے دلاکر یہ مال پشاور پہنچتا ہے، جہاں سے اسے مقامی سلاٹر ہاﺅس لے جایا جاتا ہے، جہاں اس پر متعلقہ افسران کی مہریں لگائی جاتی ہیں اور پھر اسے لاہور ، راولپنڈی سمیت دیگر گردونواح کے شہروں میں بھجوا دیا جاتا ہے۔

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں
انہوں نے مزید بتایا کہ لاہور میں بعض پولیس افسران اس سارے معاملے کو مکمل کرانے میں مدد دیتے ہیں۔ شاہد نامی قصاب نے بتایا کہ انہیں لاہور کے ایک بیوپاری صدیق نے فون پر بڑی مقدار میں کلیجی او جھڑی سستے داموں بھجوانے کی آفر کی تھی تاہم جب میں نے کلیجی اور اوجھڑی کے رنگ کے بارے میں پوچھا تو پتا چلا کہ وہ کلیجی پاکستانی نہیں بلکہ بھارت کی ہے۔ مہنگائی کے باعث زیادہ تر قصاب مال سستا ہونے کی وجہ سے خرید لیتے ہیں۔ پاکستان انسٹیٹیوٹ آف میڈیکل سائنسز کی سینئر ڈاکٹر عائشہ عیسانی نے امت سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ مضر صحت گوشت، کلیجی ، اوجھڑی کی فروخت روکنا ضلعی انتظامیہ کا کام ہے تاہم اس کے استعمال سے دل ، گردے ، مثانے اور جگر سمیت دیگر مہلک بیماریاں شہریوں کو لاحق ہو سکتی ہیں۔

مزید :

راولپنڈی -