نوجوان لڑکی 50 سالہ شہری کی محبت میں ’پاگل‘ ہوگئی، بہلا پُھسلا کر کمرے میں لے گئی لیکن پھر ایسا کام کر ڈالا کہ بیچارا پوری زندگی کبھی کوئی برا خیال بھی دل میں نہ لائے گا

نوجوان لڑکی 50 سالہ شہری کی محبت میں ’پاگل‘ ہوگئی، بہلا پُھسلا کر کمرے میں لے ...
نوجوان لڑکی 50 سالہ شہری کی محبت میں ’پاگل‘ ہوگئی، بہلا پُھسلا کر کمرے میں لے گئی لیکن پھر ایسا کام کر ڈالا کہ بیچارا پوری زندگی کبھی کوئی برا خیال بھی دل میں نہ لائے گا

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

نئی دہلی(مانیٹرنگ ڈیسک) بھارتی شہر احمد آباد میں ایک 50سالہ آدمی کو نوجوان لڑکی نے شادی کا جھانسہ دے کرقابل اعتراض تصاویر بنا لیں اور پھر بلیک میل کرکے لاکھوں روپے ہتھیا لیے۔ ٹائمز آف انڈیا کی رپورٹ کے مطابق پرشوتم مرویا نامی یہ شخص راجکوٹ کا رہائشی ہے جس کی بیوی ساڑھے تین سال قبل انتقال کر گئی تھی۔ اس نے دوبارہ شادی کا فیصلہ کیا۔ اس دوران اسے شیلا نامی رشتے کرانے والی خاتون فون کیا اور رشتہ کروانے کی پیشکش کی۔ شیلا نے بتایا کہ اس کا دفتر احمد آباد میں ہے۔ لہٰذا پرشوتم کو وہاں بلایا اور تین لڑکیاں دکھائیں۔ پرشوتم نے ان تینوں کو مسترد کر دیا اور واپس راجکوٹ آ گیا۔ کچھ دن بعد شیلا نے پھر فون کرکے پرشوتم کو بلایا اور دو خواتین اور دکھائیں، جن میں ایک منجولا نامی لڑکی بھی تھی۔ پرشوتم نے ان کو بھی مسترد کر دیا اور واپس چلا آیا۔ اس کے دو دن بعد منجولا نے پرشوتم کو فون کیا اور کہا کہ ”میں اپنے خاندان والوں کی مخالفت کے باوجود تم سے شادی کرنا چاہتی ہوں۔“ پرشوتم نے کال منقطع کر دی۔ کچھ دن بعد منجولا نے دوبارہ فون کیا اور کہا کہ ”میں تم سے محبت کرتی ہوں۔“ اس نے پرشوتم کو دھمکی دی کہ” اگر تم مجھے ملنے کے لیے احمد آباد نہ آئے تو میں خود کشی کر لوں گی اور مرنے سے پہلے ایک خط لکھ کر اس میں تمہارا نام لکھ دوں گی تاکہ بعد میں پولیس تمہیں پکڑ لے۔“پرشوتم خوفزدہ ہو گیا اور منجولا کے کہنے پر اسے ملنے چلا گیا۔ وہاں منجولا نے ایک ہوٹل میں کمرہ بک کروا رکھا تھا۔ وہ پرشوتم کو اس کمرے میں لے گئی اور پانی میں نشہ آور چیز کھلا کر بے ہوش کر دیا۔ جب وہ ہوش میں آیا تو اس کا قیمتی سامان اور 12ہزار روپے غائب تھے۔

’میری آنکھ کھلی تو 2 لوگوں نے مجھے پکڑ رکھا تھا اور باقی۔۔۔‘ 33 مردوں کے ہاتھوں درندگی کا نشانہ بننے والی نوجوان لڑکی نے ایسی داستان سنادی کہ انسانیت کانپ اٹھی

ہوٹل والوں نے اسے بتایا کہ آپ کے ساتھ آنے والی خاتون تمام سامان لے کر چلی گئی ہے۔ پرشوتم نے منجولا سے فون پر رابطہ کرنے کی کوشش کی تاہم اس نے کال نہ اٹھائی۔ اس کے بعد پرشوتم کو ایک آدمی کی کال موصول ہوئی جس نے کہا کہ ”میرے پاس تمہاری قابل اعتراض تصاویر موجود ہیں جو ایک لڑکی کے ساتھ ہوٹل کے کمرے میں بنائی گئی ہیں۔ مجھے 25لاکھ روپے دے دو ورنہ یہ تصاویر پھیلا دوں گا۔ “پرشوتم نے 5لاکھ دینے پر رضامندی ظاہر کی۔ وہ گھر سے زیورات اور رقم لے کر منجولا اور اس آدمی کو دینے کے لیے نکلا تو اس کے بیٹے نے اسے دیکھ لیا اور پوچھا کہ آپ یہ سب کچھ لے کر کہا جا رہے ہو؟ اس پر پرشوتم نے اپنے بیٹے کو تمام کہانی سنا دی۔ اس کے بیٹے نے اسے پولیس کے پاس جانے پر رضامندکر لیا اور وہ دونوں تھانے چلے گئے۔ پولیس نے منجولا، شیلا اور دو دیگر ملزموں کو گرفتار کر لیا ہے اور ان کے قبضے سے پرشوتم کا ہوٹل سے اٹھایا گیا سامان اور نقدی بھی برآمد کر لی ہے۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -