پاکستان کاقطر سعودی عرب تنازع میں غیر جانبدار رہنے کا اقدام قابل تحسین ہے،اعجازہاشمی

پاکستان کاقطر سعودی عرب تنازع میں غیر جانبدار رہنے کا اقدام قابل تحسین ...

لاہور(ایجوکیشن رپورٹر) جمعیت علما پاکستان کے مرکزی صدر پیر اعجاز احمد ہاشمی نے کہا ہے کہ مسلم ممالک کے درمیان نااتفاقی اور انتشار کے باعث دشمن اپنے مقاصد میں کامیاب ہوتا ہوا نظر آرہا ہے۔ امریکہ نے اپنا اسلحہ فروخت کرنے کے لئے عرب ممالک کو اکٹھا کرکے ایران سے ڈرایا اوراب سعودی عرب اپنی اجارہ داری قائم کرنے کے لئے کسی دوسرے ملک کے اختلاف رائے کو بھی برداشت کرنے کو تیار نہیں۔ اس سے خلیجی ریاستوں کے درمیان تلخیاں مزید بڑھیں گی جس سے امت کی تقسیم کا اسرائیلی ایجنڈا مکمل ہوگا اور ہم منہ تکتے رہ جائیں گے۔میڈیا سے گفتگو میں پیر اعجاز ہاشمی نے کہا کہ پاکستان ایٹمی قوت اور دنیا میں ذمہ دار ریاست کے طور پر پہچان رکھتا ہے، اس کا قطر سعودی عرب تنازع میں غیر جانبدار رہنے کا اقدام قابل تحسین ہے۔

۔وزارت خارجہ نے ذمہ داری کا ثبوت دیا ہے، اور قطر کے ساتھ سفارتی تعلقات ختم نہ کرنے کا اعلان مناسب وقت پر کیا گیا ہے۔

اس سے مجموعی طور پر حالات بہتر ہوں گے اور مسلم ممالک کے اختلافات کو ختم کرنے میں مدد بھی ملے گی۔پیر اعجاز ہاشمی نے کہا کہ امریکی اور اسرائیلی ایجنڈے کے تحت مسلمان ملکو ں کو آپس میں لڑایا جارہا ہے۔جس کا سب سے زیادہ نقصان اسلام اور فائدہ دشمن قوتوں کو ہوگا، عرب ممالک کو اپنی چودھراہٹ کے لئے امت مسلمہ کے وقار اور اپنی خود مختاری کو داو پر نہیں لگانا چاہیے۔قطرکی ایران سے دوستی ہے یا اسے امریکی سامراج کے خلاف بولنے کی جرات ہوئی ہے، تو اس پر عرب ممالک کو اعتراض نہیں کرنا چاہیے، ہر ملک اپنے معروضی حالات پر خارجہ پالیسی اختیار کرسکتا ہے، جو اس کی نظرمیں بہتر اور ملکی مفاد میں ہوگا۔لیکن دوسرے ممالک اپنے تابع کرنے کے لئے حملے کی دھمکیاں دیں گے تو اس سے خطے کے حالات شدید ہوں گے۔ انہوں نے کہاکہ ریاض کانفرنس سے جو مقاصدامریکہ حاصل کرنا چاہتا تھا، اس نے اسلحہ فروخت کے معاہدوں سے حاصل کرلیا ۔ عرب مممالک سے کہا گیا کہ ایران ان کے لئے خطرہ ہے، اب سعودی عرب کو چھوٹا ملک قطر خطرہ نظر آنے لگا ہے، خطرہ ہے کہ صدام حسین، حسنی مبارک، کرنل قذافی جیسا انجام کہیں مزید عرب حکمرانوں کا نہ ہو، انہیں امریکی غلامی کی پالیسی تبدیل کرکے غلامان مصطفی کا کردار اد ا کرنا چاہیے ۔جس میں باہمی اتحادا ور دشمن کے لئے سیسہ پلائی دیوار ثابت ہوں۔سعودی عرب ایران کی مخالفت چھوڑ کر متنازع ایشوز پر مذاکرات کرے، اسی طرح قطر سے بھی باقی ممالک کو سفارتی تعلقات بحال کرکے اتحاد کا مظاہرہ کرنا چاہیے، ورنہ امریکی سامراج انہیں ایک ایک کرکے کھا جائے

مزید : میٹروپولیٹن 4