طالبعلم عادل فاروق کی شہادت کیخلاف مقبوضہ کشمیر میں تیسرے روز بھی ہڑتال ، حریت قیادت بدستور نظر بند

طالبعلم عادل فاروق کی شہادت کیخلاف مقبوضہ کشمیر میں تیسرے روز بھی ہڑتال ، ...

سرینگر(آن لائن)مقبوضہ کشمیر میں طالبعلم عادل فاروق ماگر ے کی شہادت پر تیسرے روز بھی مکمل ہڑتال کی گئی جبکہ کٹھ پتلی انتظامیہ نے احتجاجی مظاہرے روکنے کیلئے سرینگر اور دیگر قصبوں میں کر فیو اور سخت پابندیاں عائد کئے رکھیں ۔ ضلع شوپیاں کے علاقے گانوپورہ میں پر امن مظاہرین پر بھارتی فوجیوں کی فائرنگ کے نتیجے میں طالبعلم عادل فاروق کی شہادت کیخلاف ہڑتال اور احتجاجی مظاہروں کی کال سید علی گیلانی ، میر واعظ عمر فاروق اور محمد یاسین ملک پر مشتمل مشترکہ حریت قیادت نے دے رکھی ہے ۔مظاہروں کا مقصد کشمیرکے بارے میں بھارتی ٹی و ی چینلوں کی جانبدارنہ رپورٹنگ اور آزادی پسند رہنماؤں ، کارکنوں اور تاجروں کی رہائش گاہوں پر بھارتی تحقیقاتی ادارے این آئی اے کے چھاپوں کیخلاف احتجاج ریکارڈ کرانا بھی ہے ۔شہید نوجوان کے اہل خانہ سے اظہار یکجہتی کیلئے جنوبی کشمیر کے علاقوں سے شوپیاں میں شہید کی رہائش گاہ تک مارچ بھی کیا جانا شامل ہے تاہم کٹھ پتلی انتظامیہ نے احتجاجی مظاہروں کی قیادت سے روکنے کیلئے سید علی گیلانی، میر واعظ عمر فاروق، شبیر احمد شاہ اور دیگر حریت رہنماؤں کو بدستور نظر بند کررکھا ہے جبکہ جموں وکشمیر لبریشن فرنٹ کے چیئرمین نظر بندی سے بچنے اور مظاہروں کی قیادت کی غرض سے روپوش ہو چکے ہیں۔

مقبوضہ کشمیر ہڑتال

مزید : علاقائی