عدالتیں عمران کیخلاف بھی تحقیقاتی ٹیم بنائیں ، تحفظات کے باوجود جے آئی ٹی سے تعاون کر رہے ہیں : مسلم لیگ (ن)

عدالتیں عمران کیخلاف بھی تحقیقاتی ٹیم بنائیں ، تحفظات کے باوجود جے آئی ٹی سے ...

اسلام آباد(این این آئی)وفاقی وزیربرائے منصوبہ بندی و ترقی احسن اقبال نے کہا ہے کہ مسلم لیگ (ن) ملک کی سب سے بڑی بیلٹ پاور ہے،سٹریٹ پاور سے بیلٹ پاور کامقابلہ نہیں ،عمران خان اداروں سے دھونس کے ذریعے من پسند فیصلے چاہتے ہیں۔ وزیر اعظم کے معاون خصوصی آصف کرمانی نے کہا ہے کہ اعلی ٰعدالتیں عمران خان کے خلاف بھی جے آئی ٹی بنائیں ٗ تمام تر تحفظات کے باوجود ہم جے آئی ٹی سے تعاون کررہے ہیں ٗ یہ تعاون آگے بھی جار ی رہے گا ٗعدالت اور عوام میں جانے کا حق رکھتے ہیں ٗہمارے ساتھ زیادتی ہوئی تو اپنا حق استعمال کرینگے ٗ تحفظات کسی قسم کے بھی ہوں ان کو دور کیا جانا چاہیے ۔ جمعہ کو جوڈیشل اکیڈمی باہر میڈیا سے بات کرتے ہوئے آصف کرمانی نے کہا کہ تمام تر تحفظات کے باوجود ہم جے آئی ٹی سے تعاون کررہے ہیں اور یہ تعاون آگے بھی جاری رہے گا ٗہم نے ماضی میں بھی احتساب کرایا آج بھی احتساب کرا رہے ہیں ٗ وزیر اعظم دودھ کا دودھ اور پانی کا پانی چاہتے ہیں، اسی لیے حکومت نے جے آئی ٹی کو مضبوط بنایا اور اسے نیب کے اختیارات دیئے۔ حسن نواز اور حسین نواز نے استثنیٰ نہیں لیا، جب بھی جے آئی ٹی نے بلایا وہ پیش ہوئے، جو دستاویز جے آئی ٹی مانگتی ہے ہم پیش کر دیتے ہیں تاہم حکومت بے بس نہیں ٗ ہم عدالت اور عوام میں جانے کا حق رکھتے ہیں ٗہمارے ساتھ زیادتی ہوئی تو اپنا حق استعمال کریں گے ٗ تحفظات کسی قسم کے بھی ہوں ان کودورکیا جانا چاہیے۔وزیر اعظم کے معاون خصوصی نے کہا کہ عمران خان صاحب نے فرمایا ہے جو ن لیگ کریگی وہی میں کروں گا ٗکاش عمران خان نے چار سال ضائع نہ کئے ہوتے (ن) لیگ کی طرح کام کرتے، ہماری بھی عمران خان سے درخواست ہے جومسلم لیگ (ن) کرے وہی آپ کریں ٗمرضی کے فیصلے نہ آنے پر وہ ملک میں فساد کرانے اور سڑکوں پر آنے کی بات کرتے ہیں۔ عمران خان الزام تو لگاتے ہیں تاہم عدالتوں کا سامنا نہیں کرتے۔ مسلم لیگ (ن) دہشت گردی کے خلاف لڑرہی ہے لیکن عمران خان دہشت گردوں کا پشاور میں دفتر کھلوانا چاہتے تھے ٗانہوں نے سی پیک کے منصوبے کو سبوتا ژکرنے کی کوشش کی۔وزیراعظم کے معاون خصوصی نے اعلیٰ عدالتوں سے مطالبہ کیا کہ دھرنے کے دوران ملک کو نقصان پہنچانے ، کنٹینر پر کھڑے ہوکر سرکاری املاک کو نقصان پہنچانے پر عمران خان کے خلاف بھی جے آئی ٹی بنائی جائے۔ ان کا کہنا تھا کہ کسی کی ڈیمانڈ سے پہلے نوازشریف نے سب سے پہلے خود کو احتساب کیلئے پیش کیاہے۔ کیونکہ وزیراعظم نوازشریف چاہتے ہیں کہ ملک میں احتساب ہوں اس موقع پر وزیر مملکت طارق فضل چوہدری نے کہا کہ تحریک انصاف کے پاس نئے پاکستان کا فارمولا نہیں تھا اس لیے اس دھرنے، سڑکیں ناپنے اور گالم گلوچ کی سیاست شروع کی۔ پرویز مشرف دور میں بھی ہمارا احتساب ہوا لیکن کچھ برآمد نہیں ہوا، عمران خان عدالتوں کے بھگوڑے ہیں ٗوہ عدالت میں منی ٹریل پیش کرنے میں ناکام ہوئے اور پریس کانفرنسیں کرتے پھرتے ہیں۔وزیر مملکت نے کہا کہ تحقیقاتی اداروں اور ایجنسیوں پر اعتراضات نئی بات نہیں ٗہم نے کسی ادارے کو متنازع نہیں بنایا، ہمیں بھی جے آئی ٹی پر اعتراضات تھے تو اسے عدالت عظمی ٰمیں لے کرگئے، ہمارے اعتراضات کو نہیں سناگیا، پھر بھی ہم جے آئی ٹی میں پیش ہوگئے۔ ہمارا کوئی بچہ کسی ایسی جگہ ہو جہاں ہماری پہنچ نہ ہو تو کیا ہم پریشان نہیں ہوں گے۔مسلم لیگ ن کے رہنما طارق فضل چوہدری کا کہنا تھا کہ عمران خان نے انتخابات ہارنے کے بعد عدالتی جنگ شروع کی جس کا مقصد سیاسی میدان میں ملنے والی ناکامیوں کو چھپانا تھا۔

مسلم لیگ (ن )

مزید : علاقائی