ٹرمپ کا گفتگو افشا کرنے پر محکمہ انصاف کو جیمز کومی کی شکایت کرنے کا فیصلہ

ٹرمپ کا گفتگو افشا کرنے پر محکمہ انصاف کو جیمز کومی کی شکایت کرنے کا فیصلہ

واشنگٹن (اظہر زمان، بیورو چیف) ایف بی آئی کے سابق ڈائریکٹر جیمز کومی نے سینیٹ انٹیلی جنس کمیٹی کے سامنے اپنی حالیہ شہادت میں جس طرح صدر ٹرمپ کا پول کھولا ہے اس کا کوئی جواب نہ ہونے کی وجہ سے اب ایک مختلف حربہ اختیار کیا جارہا ہے ،معلوم ہوا ہے کہ صدر ٹرمپ ذاتی اٹارنی کے ذریعے اپنی گفتگو کے میمو افشاء کرنے پر محکمہ انصاف کو شکایت کرنے جارہے ہیں، محکمہ انصاف کے انسپکٹر جنرل کے نام درخواست دینے کے ساتھ ساتھ سینیٹ کی انٹیلی جنس اور جوڈیشری کمیٹیوں کو بھی اس سلسلے میں آگاہ کیا جائے گا۔جیمز کومی نے انٹیلی جنس کمیٹی کے ایک سوال کے جواب میں بتایا تھا کہ اپنی برطرفی کے بعد گزشتہ ماہ انہوں نے صدر ٹرمپ سے اپنی گفتگو کے بارے میں میمو ایک دوست کو میڈیا کو فراہم کرنے کے لئے دیئے تھے، انہیں امید تھی کہ اس طرح ٹرمپ ٹیم کے روسی کنکشن کی تحقیقات کیلئے سپیشل پراسیکیوٹر مقرر ہوجائے گا اور بعد میں ایسا ہی ہوا کہ ڈپٹی اٹارنی جنرل نے اس کام کیلئے سپیشل پراسیکیوٹر مقرر کردیا، صدر ٹرمپ نے اپنے اس ذاتی اٹارنی مارک کیسووز کے ذریعے جیمز کومی کے بیان کی تردید جاری کرائی تھی، ٹرمپ ٹیم جیمز کومی کی 3 مئی کو جوڈیشنری کمیٹی کے سامنے شہادت میں دلچسپی رکھتی ہے جو انہوں نے اپنی برطرفی سے ایک ہفتہ قبل دی تھی، اس شہادت کے دوران چیئرمین چارلس گراسلی نے جیمز کومی سے پوچھا تھا کہ وہ صدر ٹرمپ کے معاملات کے بارے میں کسی خبر کے گم نام ذریعہ بھی رہے ہیں، جیمز کومی نے اس سوال کا جواب نہیں دیا تھا۔

ٹرمپ۔ کومی

مزید : صفحہ آخر